بجٹ عوام دشمن، جنوبی پنجاب سے سوتیلی ماں جیسا سلوک کیاجارہاہے، حضور بخش لاڑ

  بجٹ عوام دشمن، جنوبی پنجاب سے سوتیلی ماں جیسا سلوک کیاجارہاہے، حضور بخش لاڑ

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر) مرکزی چیئر مین جے آئی کسان جام حضور بخش لاڑ نے کہا کہ یہ امر انتہائی افسوسناک ہے کہ وفاقی وصوبائی بجٹس میں جنوبی پنجاب صوبے کے قیام اور عوام کیلئے کوئی بڑی خوشخبری نہیں ہے اور نہ ہی کسی(بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

میگا پروجیکٹ کوبجٹ کا حصہ بنایا گیا ہے یہاں تک کہ جاری ترقیاتی کاموں کیلئے بھی ضرورت کے مطابق فنڈز نہیں رکھے گئے۔ جنوبی پنجاب کے عوام کورونا سے سب سے زیادہ متاثر ہورہے ہیں اور ٹڈی دل کے حملے نے کاشتکاروں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ موجودہ حکمرانوں نے کاشتکاروں کے نقصان کو مد نظر نہیں رکھا۔ تحریک انصاف نے انتخابات کے موقع پر پیپلز پارٹی، ن لیگ کی طرح علیحدہ صوبے کے قیام کا وعدہ کیا تھا لیکن صوبے کے قیام کے پہلے مرحلے کیلئے بھی فنڈز مہیا نہیں کئے گئے۔ماضی کی حکومتوں کی طرح موجودہ حکومت نے بھی عوام سے دھوکہ اور ان کی تمناؤں کا خون کیا ہے۔ موجودہ حکومت کو22ماہ مکمل ہونے والے ہیں حکومت نے فراڈ بجٹ پیش کیا ہے جس میں تاریخ کا سب سے بڑا خسارہ دکھا یاگیا ہے۔ حالات اس نہج پر پہنچ گئے ہیں کہ اب فی کس آمدنی بھی کم ہوگئی ہے اور ٹیکس جمع کرنے کے بارے میں بھی خیالی پلاؤ پکائے جارہے ہیں جس سے عوام کو کوئی فائدہ نہیں۔ پاکستان واحد ملک ہے جس کی آبادی میں اضافہ ہورہا ہے لیکن قومی ترقی کی شرح کم ہورہی ہے۔ بیروزگاری میں اضافہ ہورہا ہے۔وزیر اعظم نے اقتدار میں آنے سے قبل ہر جلسہ میں اعلان کیا تھا کہ وہ پٹرول کی قیمت 48روپ فی لٹر تک لائیں گے پوری دنیا میں جب پٹرول پانی کی طرح بہہ رہا ہے، تب بھی پاکستان کے عوام کو پٹرول نہیں مل رہا۔ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کرنے والی حکومت کے وزراء کہہ رہے ہیں کہ1کروڑ70لاکھ افراد بے روزگار ہوں گے۔ 10لاکھ صنعتی یونٹس اور50لاکھ گھر بنانے کا وعدہ پورا نہیں ہوا اور نہ ہی بھاشا ڈیم کی تعمیر کی طرف کوئی توجہ دی جارہی ہے۔ مدینہ کی ریاست بنانے کے دعویدارحکمرانوں کے دور میں سودی نظام مسلط کردیا گیا ہے۔ یہ بجٹ نہ تو قومی اسمبلی نے بنایا ہے اور نہ ہی پی ٹی آئی کی قیادت نے بلکہ یہ بجٹ آئی ایم ایف نے بنایا ہے اور انہیں کے کاغذات کو وزیر صنعت نے اسمبلی میں پیش کیا ہے جسے معیشت کے ماہرین نے مسترد کیا ہے کیونکہ اس سلسلے میں کاشتکاروں،تاجروں، صنعتکاروں، مزدوروں، محنت کشوں اور عوام کے نمائندوں سے کوئی مشاورت نہیں کی گئی۔

حضور بخش لاڑ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -