ضلع ہنگو کورونا وائرس کے شکنجے میں 3ڈاکٹروں سمیت 41افراد وائرس کا شکار

  ضلع ہنگو کورونا وائرس کے شکنجے میں 3ڈاکٹروں سمیت 41افراد وائرس کا شکار

  

ہنگو (بیورو رپورٹ) ضلع ہنگو کورونا وائرس کے شکنجے میں 3ڈاکٹروں سمیت 41افراد مذید کورونا وائرس کا شکار ضلع ہنگو میں اچانک اموات میں بھی اضافہ تفصیلات کے مطابق کورونا کنٹرول روم ہنگو سے جاری رپورٹ کے مطابق 3ڈاکٹر عبدالرحمن ڈاکٹر کوثر ڈاکٹر سید محمد سمیت مذید 41افراد کی کورونا وائرس کا ٹیسٹ پازیٹیو آئے ہیں محکمہ صحت ہنگو کی طرف سے جاری رپورٹ کے مطابق ان افراد کا کوئی ٹریول ہسٹری نہیں ہے ضلع ہنگو میں اب اندورنی طور پر مقامی لوگوں میں کورونا کی وباء تیزی سے پھیل رہی ہے اب تک ضلع ہنگو میں کورونا وائرس سے تصدیق شدہ 15سے ذیادہ افراد کی موت ہو چکی ہے جبکہ 20سے ذیادہ افراد صحت یاب بھی ہو چکے ہیں ضلع ہنگو میں روزانہ کی بنیاد پر اچانک چار سے پانچ اموات ہو جاتی ہیں جس کا اب تک ڈیتھ آف کاز معلوم نہیں ہے جبکہ اکثر افراد خوف کی وجہ سے کورونا ٹیسٹ بھی نہیں کراتا اس وقت درجنوں افراد بغیر ٹیسٹ کے اپنے گھروں میں کورنٹائن ہیں اس حوالے سے سابق ایم پی اے و جمعیت علماء اسلام ف کے رہنما عتیق الرحمن نے بھی میڈیا سے بات چیت کے دوران خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ہنگو میں اندورنی طور پر کورونا کی وباء تیزی سے پھیل رہی ہے ہنگو میں صحیح ٹیسٹ کرنے کی سہولت نہیں ہے اگر صحیح طریقے سے ٹیسٹ کئے جائیں تو ضلع بھر میں 80فی صد افراد کی کورونا ٹیسٹ پازیٹیو آسکتے ہیں انہوں نے یہ بھی کہا کہ روزانہ کی بنیاد پر ضلع بھر میں چار سے پانچ افراد کی اچانک موت واقع ہو جاتی ہے یہ سب کورونا ڈیتھس ہیں مگر ان کی ڈیتھ آف کاز معلوم نہیں ہے انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ اگر ہم نے اپنی مدد آپ کے تحت ایس او پیز پر عمل نہیں کیا اور احتیاطی تدابیر نہیں اپنائے سماجی فاصلے اختیار نہیں کئے تو کورونا کی وباء بے قابو ہو جائے گی اور ضلع ہنگو کورونا کا گڑھ بن جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -رائے -