میرے والد کا لگایا گیا پودا آج تناور درخت بن چکا‘ میجر عامر

  میرے والد کا لگایا گیا پودا آج تناور درخت بن چکا‘ میجر عامر

  

صوابی(بیورو رپورٹ)ممتاز قومی شخصیت اور آئی ایس آئی اسلام آباد کے سابق اسٹیشن چیف میجر(ر) محمد عامر نے کہا ہے کہ معاشرے کی برکت وہ علماء ہیں جو شیخ عبدالجبار جیسی پاکیزہ شخصیت اور نیک سیرت کے مالک ہوں۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے شیخ عبدالجبار کے اعزاز میں دی گئی الوداعی ضیافت کے موقع پر موجود علماء سے گفتگو کے دوران کیا۔ جس میں کئی جید علماء کرام کے علاوہ میجر(ر) محمد عامر کے بڑے بھائی حاجی محمد صابر نے بھی شرکت کی۔ شیخ عبدالجبار بارہ سال تک پنج پیر میں درس و تدریس کے فرائض انجام دینے کے بعد اپنے آبائی علاقے باجوڑ واپس مستقل سکونت اختیار کرنے جارہے تھے اس دوران شیخ عبدالجبار میجر (ر) محمد عامر کی ذاتی رہائش گاہ میں قیا م پذیر رہے۔ اس موقع پر میجر (ر) محمد عامر نے کہا کہ میرے والد کی تحریک کا اصل چہرہ شیخ عبدالجبار، مفتی سراج الدین، مولانا مسیح اللہ اور حاجی خلیل الرحمن جیسے صاحب کر دار علماء کرام ہیں۔ ایسے لوگوں کی رہنمائی اور مشاورت نصیب والوں کو ملتی ہے انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ ہے جو ابتلاء اور آزمائشوں کے میدان کارزار میں میرے والد کے ساتھ اس وقت کھڑے رہے جب ان کی پشت پر بیوہ ماں اور میرے عظیم والدہ کے سوا اور کوئی نہ تھا اشاعت کی درخت کی آبیاری انہی لوگوں نے کی۔ اور آج والد محترم کا لگایا ہوا پودا توحید کے پھلوں سے لدا ہوا وہ درخت بن چکا ہے جس کے پھلوں سے کوئی بھی لطف اندوز ہو سکتا ہے البتہ اس درخت کو زہریلے کیڑوں، دیمک اور ٹڈی دل سے بچانا ہم سب کا فرض ہے انہوں نے کہا کہ یہ سعادت میرے نصیب میں تھی کہ جہاں والدہ اور والد دونوں بیماری کی حالت میں سالہا سال میر ے پاس رہے دونوں کی خدمت میرے نصیب میں آئی اور دونوں نے میرے ہی ہاتھوں میں جان اللہ کے سپرد کی۔ وہاں ان کے رفیق خاص مولانا یار بادشاہ کی وفات بھی میرے ہی گھر پر ہوئی اسطرح شیخ عبدالجبار نے بھی بارہ سال تک میرے گھر کو قر آن کی برکت اور نور سے منور رکھا یہ سعادت اللہ ہر کسی کو نہیں دیتا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -رائے -