وزیرستان میں دہشتگردی، کیپٹن اور جوان شہید، مقبوضہ کشمیر میں انڈین فوجیوں کی فائرنگ 4کشمیری شہید، ایل او سی پ بچی شہید، 2زخمی

وزیرستان میں دہشتگردی، کیپٹن اور جوان شہید، مقبوضہ کشمیر میں انڈین فوجیوں ...

  

راولپنڈی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیرستان میں دہشتگردوں کے ساتھ فائرنگ تبادلے میں پاک فوج کا ایک کپتان اور جوان شہید، 2 سپاہی زخمی ہو گئے، جوابی فائرنگ میں ایک دہشت گرد بھی مارا گیا۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق شمالی اور جنوبی وزیرستان کی سرحد پر دہشتگردوں نے پاک فوج کی گشت کرنے والی ٹیم پر حملہ کر دیا، فائرنگ کی زد میں آکر کیپٹن صبیح اور نوید نامی جوان شہید ہو گئے جبکہ 2 سپاہی شدید زخمی ہوئے۔جوابی فائرنگ میں ایک حملہ آور دہشت گرد مارا گیا جبکہ فورسز نے دہشتگردوں کا ایک کمپاونڈ بھی تباہ کر دیا۔ واقعے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کر دیا جبکہ زخمی سپاہیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

دہشت گردی

مظفرآباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج کی بلااشتعال فائرنگ کے نتیجے میں ایک کمسن لڑکی جاں بحق جبکہ اس کی ماں اور ایک کمسن لڑکا زخمی ہو گیا۔ بھارتی شیلنگ صبح ساڑھے 10بجے شروع ہوئی اور شام 4بجے تک مستقل جاری رہی جس میں بھارتی فوج نے خورشید آباد سب ڈویڑن میں ہلانا، کالا ملا اور دیگر گاؤں کی آبادی کو بلاامتیاز نشانہ بنایا۔کالاملا میں ایک متاثرہ گھر میں 35سالہ خاتون زاہدہ شبیر زخمی اور 14سالہ کمسن لڑکی اقرا شبیر جاں بحق ہو گئی۔اسی گاؤں میں ایک 9سالہ لڑکا صدام بھی بھارتی فوج کی شیلنگ سے زخمی ہو گیا۔ ہلان گاؤں میں شیلنگ سے ایک گھر مکمل تباہ ہو گیا جبکہ ایک کو جزوی طور پر نقصان پہنچا البتہ مکانوں میں رہائش پذیر افراد کو زخمی ہونے سے بچا کر محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔آزاد جموں و کشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج کی اشتعال انگیزی میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے کیونکہ نئی دہلی میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت عالمی برادری کی توجہ لداخ کے علاقے میں چینی فوج کے ہاتھوں پہنچنے والی ہزیمت سے ہٹانا چاہتی ہے۔راجہ فاروق حیدر نے بھارتی فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں کمسن لڑکی کی موت اور دو افراد کے زخمی ہونے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی فوج دونوں طرف کے کشمیریوں کو نشانہ بنا رہی ہے اور یہ اس بات کی متقاضی ہے کہ اقوام متحدہ اور عالمی برادری سنجیدگی سے اس بات کا نوٹس لے۔ترجمان پاک فوج کے مطابق پاکستان آرمی کی جانب سے بھی بھارتی اشتعال انگیزی کا بھر پور جواب دیا گیا۔

ایل او سی

سرینگر (آئی این پی)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کی ریاستی دہشت گردی جاری ہے اور قابض فورسز نے نام نہاد آپریشن کی آڑ میں مزید 4کشمیریوں کو شہید کر دیا ہے۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق سری نگر میں بھارتی فوج نے مزید 3 کشمیری نوجوانوں کو محاصرے کی آڑ میں شہید کر دیا۔رپورٹ کے مطابق سری نگر میں موبائل اور انٹرنیٹ کی سروس بھی معطل ہے۔اس کے علاوہ بھارتی فوجیوں نے بڈگام اور سوپور کے علاقوں سے 12 سے زائد نوجوانوں کو گرفتار بھی کر لیا ہے۔۔شہید نوجوانوں میں حزب المجاہدین سے تعلق رکھنے والے قمرواری سرینگر کے شکور فاروق لانگو، جیش محمد کے شاہد احمد بھٹ اور بیمنہ کے ہلال احمد شامل ہیں جو حال ہی میں غائب ہو گیے تھے۔ سرینگر میں زونی مرگ کے علاقی گلی کدل کے محلہ پاڑل پورہ میں عسکریت پسندوں کے چھپے ہونے کی اطلاع پر سکیوریٹی فورسز نے سرچ آپریشن شروع کیا۔جہاں پولیس اور عسکریت پسندوں کے درمیان خونریز جھڑپ میں 3 کشمیری مجاہدین شہید ہوگئے۔جن کا تعلق حزب المجاہدین اور جیش سے بتایا جارہا ہے۔آپریشن کے مقام پر دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ مقبوضہ جموں و کشمیر کے ضلع شوپیاں میں اتوارکی صبح سکیورٹی فورسز اور عسکریت پسندوں کے درمیان ایک آپریشن کے دوران تصادم ہوگیا، اس دوران ایک عسکریت پسند کے شہید ہونے کی اطلاع ہے۔ بھارتی فوج، پولیس اور سنٹرل ریزرو پولیس فورس کے اہلکاروں نے سوپور کے علاقے سید پورہ کومحاصرے میں لے کر گھر گھر تلاشی شروع کی جبکہ تمام داخلی اورخارجی راستوں کو سیل کردیا گیا۔ قابض حکام نے دونوں اضلاع میں موبائل انٹرنیٹ سروسز معطل کردی ہیں۔ادھر سوپور میں بھارتی پولیس نے تین نوجوانوں کو گرفتار کرلیا۔

مقبوضہ کشمیر

مزید :

صفحہ اول -