مچھر کی تھوک سے ویکسین کی تیاری، بڑی خوشخبری آگئی

مچھر کی تھوک سے ویکسین کی تیاری، بڑی خوشخبری آگئی
مچھر کی تھوک سے ویکسین کی تیاری، بڑی خوشخبری آگئی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) مچھروں کی وجہ سے پھیلنے والی بیماریاں دنیا میں ہر سال لاکھوں لوگوں کی جانیں نگل جاتی ہیں۔صرف ایک ملیریا ہی کو لیں تو عالمی ادارہ صحت کے مطابق مچھر سے پھیلنے والی اس بیماری سے 2017ءمیں دنیا بھر میں 4 لاکھ 35ہزار اموات ہوئیں۔ ان میں سے 80فیصد اموات بھارت اور افریقی خطے میں ہوئیں۔ اس کے علاوہ ڈینگی، چکن گونیا، ذکا، ییلو فیور، ویسٹ نیل اور میارو جیسی بیماریاں ہیں جو مچھروں سے پھیلتی اور لاکھوں لوگوں کو لقمہ اجل بنا جاتی ہیں۔ ان تمام بیماریوں کی الگ الگ ویکسینز اور ادویات موجود ہیں مگر اب ماہرین ایک ایسی ویکسین تیار کرلی ہے جو مچھروں سے پھیلنے والی تمام بیماریوں کا یکسر خاتمہ کر دے گی۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق امریکہ کے نیشنل انسٹیٹیوٹ آف الرجی اینڈ انفیکشس ڈیزیزز کے سائنسدان یہ ویکسین مچھر کے لعاب سے تیار کر رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق انسٹیٹیوٹ کی ماہر جیسیکا میننگ اور ان کی ٹیم کی تیار کردہ اس ویکسین کے کلینکل ٹرائیلز ہو چکے ہیں جن کے بہت مثبت نتائج سامنے آ ئے ہیں۔ دی لینسنٹ میں شائع ہونے والے ان تحقیقاتی نتائج کے مطابق یہ ویکسین نہ صرف انسانوں کے لیے محفوظ ہے بلکہ مچھروں سے پھیلنے والی تمام بیماریوں کے خلاف بھی شدید مزاحمت رکھتی ہے۔ یہ انسانوں میں اینٹی باڈی اور سیلولر ردعمل کو ابھارتی ہے اور ایسی ہر بیماری کے خلاف مدافعت پیدا کرتی ہے جو مچھروں سے پھیلتی ہیں۔ جیسیکا میننگ کا کہنا ہے کہ ”اس ویکسین کے ذریعے ہم انسانی جسم کے مدافعتی نظام کو تربیت دینا چاہتے ہیں کہ وہ مچھر کے سلیوا پروٹینز کو پہچانے اور اس سلیوا کے ساتھ جسم میں آنے والی انفیکشن کو ختم یا کمزور کرے۔اب تک کے تجربات میں اس ویکسین کے نتائج بہت متاثر کن رہے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ یہ ویکسین مچھروں سے پھیلنے والی بیماریوں کے علاج میں ایک اہم سنگ میل ثابت ہو گی۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -تعلیم و صحت -