20 فوجیوں کی ہلاکت، بھارت نے چین کے ساتھ 5 ہزار کروڑ کے معاہدے روک دیے

20 فوجیوں کی ہلاکت، بھارت نے چین کے ساتھ 5 ہزار کروڑ کے معاہدے روک دیے
20 فوجیوں کی ہلاکت، بھارت نے چین کے ساتھ 5 ہزار کروڑ کے معاہدے روک دیے

  

ممبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) لداخ کی وادی گلوان میں چینی فوج کے ہاتھوں 20 بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کے بعد ریاست مہاراشٹر نے چینی کمپنیوں کے ساتھ کیے گئے 5 ہزار کروڑ روپے کے معاہدے روک دیے ہیں۔

ریاست مہاراشٹر کے وزیر صنعت سبھاش دیسائی کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت سے مشاورت کے بعد چینی کمپنیوں کے ساتھ معاہدوں پر دستخط نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، وزارت خارجہ نے چین کے ساتھ مزید کسی بھی معاہدے پر دستخط کرنے سے ہمیں روک دیا ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ پیر کو چینی کمپنیوں اور بھارتی ریاست مہاراشٹر کے حکام اور صنعتکاروں کے درمیان ایک آن لائن کانفرنس ہوئی تھی جس میں انڈیا میں چینی سفیر سن وی ڈونگ نے بھی شرکت کی تھی۔ سن وی ڈونگ پاکستان میں بھی بطور سفیر خدمات سرانجام دے چکے ہیں۔

اس کانفرنس میں تین معاہدوں پر اتفاق کیا گیا تھا جن میں سے ایک 3770 کروڑ روپے کا گریٹ وال موٹرز کے ساتھ معاہدہ تھا جس کے تحت پونے کے قریب آٹو موبل پلانٹ لگایا جانا تھا۔ اس کے علاوہ 1000 کروڑ کا انڈین کمپنی پی ایم آئی الیکٹرو موبلٹی کا چینی کمپنی فوٹون کے ساتھ جوائنٹ وینچر تھا جبکہ ایک اور معاہدہ 250 کروڑ کا تھا۔

مزید :

بین الاقوامی -