وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی حکومت کو مقبوضہ کشمیرمیں ’آزادانہ ریفرنڈم‘ کرانے کا چیلنج کردیا

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی حکومت کو مقبوضہ کشمیرمیں ’آزادانہ ...
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھارتی حکومت کو مقبوضہ کشمیرمیں ’آزادانہ ریفرنڈم‘ کرانے کا چیلنج کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن ) وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت کا 24جون کو کانفرنس بلانے کا اعلان اشارہ کرتا ہے کہ سب اچھا نہیں ہے،بھارت کا خیال تھا کہ 5 اگست 2019 کے اقدامات سے انہیں پذیرائی ملے گی ،بھارت سرکار کو کھلا چیلنج ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں آزادانہ ریفرنڈم کروائے۔

تفصیلات کے مطابق شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اگرمقبوضہ کشمیر میں یکطرفہ اقدامات مسترد ہوئے تو بھارت کو فیصلوں پر نظرثانی کرنا ہو گی،تمام کشمیری 5اگست کے اقدامات کے خلاف متحد ہو گئے ہیں، بھارتی حکومت کے ساتھ اقتدار میں شریک رہنے والوں نے بھی مودی کے اقدامات کو مسترد کیاہے۔

شا ہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ترکی میں افغان اعلیٰ سطحی مفاہمتی کونسل کے سربراہ ڈاکٹر عبداللہ عبداللہ سے ملاقات ہوئی،عبداللہ عبداللہ کا نکتہ نظر سن کر میری پریشانی میں اضافہ ہوا، افغانستان کی داخلی صورت حال تشویشناک ہے ،وہاں کوئی اتحاد دکھائی نہیں دیتا،60فیصد فوجی انخلا کے بعدبھی اگر طالبان سے مذاکرات تعطل کا شکار رہے تو باعث تشویش ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری خواہش ہے کہ افغانستان میں امن و استحکام ہو ،افغان صدر اشرف غنی نے آرمی چیف، وزیر دفاع اور وزیر داخلہ کو تبدیل کیا،تبدیلیاں اس بات کا اشارہ ہے کہ وہ خود حالات سے مطمئن دکھائی نہیں دیتے ،پاکستان امن میں شراکت داری کیلئے تیار ہے اوررہے گا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -