شوہر کی جیب سے مساج پارلر کا کارڈ برآمد ہونے پر بیوی نے طلاق لے لی

شوہر کی جیب سے مساج پارلر کا کارڈ برآمد ہونے پر بیوی نے طلاق لے لی
شوہر کی جیب سے مساج پارلر کا کارڈ برآمد ہونے پر بیوی نے طلاق لے لی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں ایک خاتون نے اپنے شوہر کی جیب سے مساج پارلر کا کارڈ برآمد ہونے پر اس سے طلاق لے لی۔ دی سن کے مطابق اس 49سالہ خاتون نے بتایا کہ وہ دھونے کے لیے کپڑے اکٹھے کر رہی تھی جب اس کے شوہر کی جیب سے مساج پارلر کا کارڈ برآمد ہوا۔ یہ پارلر ایسا تھا جسے کے متعلق پورے علاقے کے لوگ جانتے ہیں کہ وہاں کام کرنے والی تمام خواتین جسم فروش ہیں اور اس پارلر میں بھی مبینہ طور پر یہی دھندہ ہوتا ہے۔

خاتون نے بتایا کہ جب میں نے اپنے شوہر سے اس حوالے سے پوچھا تو پہلے اس نے انکار کیا اور کہنے لگا کہ یہ کارڈ ایک دوست نے دیا تھا جو جیب میں رہ گیا۔ تاہم میں اس کے جھوٹ میں آنے والی نہیں تھی۔ جب میں نے اصرار کیا تو اس نے اعتراف کر لیا کہ وہ اس مساج پارلر میں گیا تھا اور مکمل برہنہ مساج لیا تھا۔ اس نے کہا کہ اس نے وہاں کسی عورت کے ساتھ جسمانی تعلق قائم نہیں کیا مگر مجھے اس پر اعتبار نہ رہا تھا چنانچہ میں نے اپنی 25سالہ ازدواجی زندگی کا خاتمہ طلاق پر کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ ہمارے دو جوان بیٹے تھے، میں نے انہیں اس حوالے سے بتایا اورطلاق کے لیے عدالت سے رجوع کر لیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -