ایپکا کا26مارچ کو ایوان وزیراعلیٰ کے باہر احتجاج کا اعلان

ایپکا کا26مارچ کو ایوان وزیراعلیٰ کے باہر احتجاج کا اعلان

 لاہور ( لیاقت کھرل) ایپکا پنجاب نے تمام تر سرکاری یقین دہانیوں کے باوجود اپنے مطالبات تسلیم نہ ہونے پر 26 مارچ کو ایوان وزیر اعلیٰ کے باہر ذبردست احتجاجی دھرنے کا اعلان کر دیااور انتباہ کیا ہے کہ اگلے 24 گھنٹوں کے اندر چارٹر آف ڈیمانڈ کی منظوری نہ ہوئی تو تادم مرگ بھوک ہڑتال بھی کرنے سے گریز نہیں کیا جائے گا ان خیالات کا اظہار سرکاری ملازمین کی تنظیم ایپکا کے صوبائی و مرکزی عہدیداروں نے ’’پاکستان فورم‘‘ میں کیا ۔ اس موقع پر ایپکا کے صوبائی صدر حاجی محمد ارشاد چودھری نے کہا کہ پنجاب حکومت گزشتہ دو سالوں سے سرکاری ملازمین کے چارٹر آف ڈیمانڈ پر عمل درآمد نہیں کر رہی جس میں بجٹ 2013ء میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 15 فیصد اضافہ کیا گیا تمام صوبوں نے تنخواہوں میں 15 فیصد اضافہ کیا جبکہ پنجاب حکومت نے 10 فیصد اضافہ اور تاحال 5 فیصد مزید اضافہ نہیں کیا اس کے علاوہ ملازمین کی ٹائم سکیل پرموشن اور ملازمین کی تنخواہوں میں 20 فیصد الاؤنس سمیت 14 مطالبات پر مشتمل چارٹر آف ڈیمانڈ پر عمل درآمد نہیں کیاجا رہا اب حکومت کے ساتھ کسی قسم کے مذاکرات نہیں ہوں گے بلکہ سڑکوں پر دما دم مست قلندر ہو گا اور 26 مارچ کو ایوانِ وزیر اعلیٰ کا گھیراؤ کیا جائے گا] مرکزی چیئرمین حاجی فضل داد گجر نے کہاکہ پنجاب اسمبلی کے سامنے بھی بھوک ہڑتالی کیمپ لگایا جائے گا ۔ جنرل سیکرٹری لالہ محمد اسلم نے کہا کہ حکومت ملازمین کے جائز مطالبات اگلے 24 گھنٹوں کے اندر منظور کرے وگرنہ کل سے لاہور سمیت پنجاب بھر کے دفاتر کا بائیکاٹ کا سلسلہ شروع کر دیا جائے گا ا اس موقع پر یونس بھٹی، رانا محمد اشرف اور ارشد باجوہ سمیت عبدالشکور کمبوہ اور دیگر نے کہا کہ اب حکومت سے کسی قسم کے مذاکرات نہیں ہوں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1