ایم کیو ایم سمیت کوئی جماعت مسلح گروپوں کو ختم کرنے کے قانون سے ماورا نہیں، عمران خان

ایم کیو ایم سمیت کوئی جماعت مسلح گروپوں کو ختم کرنے کے قانون سے ماورا نہیں، ...

 بنوں( مانیٹرنگ ڈیسک ،اے این این)تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم سمیت کوئی جماعت مسلح گروپوں کو ختم کرنے کے قانون سے ماورا نہیں،حکومت میں بیٹھے مسلح گروپوں کے خلاف بھی کارروائی ہونی چاہیے،جوڈیشل کمیشن کے قیام کا فیصلہ عوام کی بڑی کامیابی ہے،دھرنوں پر آنے والے مبارکباد کے مستحق ہیں،کمیشن کے نتیجے میں بہت کچھ سامنے آئے گا،ہم دھاندلی کے شواہد پیش کرینگے، دھاندلی کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن کا قیام عوام کی بڑی کامیابی ہے،ملک میں جمہوریت آگے بڑھے گی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے بنوں میں طویل عرصے سے بند سکول کھولنے کی تقریب میں شرکت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔نحہ پشاور کے بعد 2 کل جماعتی کانفرنس ہوئی جس میں تمام جماعتوں کے اتفاق سے فیصلہ ہوا تھا کہ ملک میں کسی مسلح گروپ کو اجازت نہیں دی جائے گی اور جو مسلح گوپ موجود ہیں ان کے خلاف کارروائی ہوگی لہذا ایم کیو ایم بھی اس قانون سے ماورا نہیں جب کہ سب سے پہلے ان جماعتوں کے مسلح گروپس کے خلاف کارروائی ہونی چاہئے جو حکومت کا حصہ ہیں۔ عمران خان نے کہا کہ جوڈیشل کمیشن کی تشکیل کا فیصلہ پاکستانی عوام کی بہت بڑی کامیابی ہے، عوام کے دبا اور دھرنے کی وجہ سے جوڈیشل کمیشن بنانے کا فیصلہ کیا گیا اور ملکی تاریخ میں پہلی بار انتخابات میں دھاندلی کی تحقیقات ہوں گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم کمیشن کے سامنے انتخابات میں دھاندلی کے ثبوت لائیں گے جب کہ اس سے ملک میں جمہوریت آگے بڑھے گی۔انھوں نے کہا کہ لاکھوں پاکستانی 126دنوں کے دھرنوں پر آئے میں ان کو مبارکباد دینا چاہتا ہوں کہ پہلی دفعہ ملکی تاریخخ میں انتخابی دھاندلی کی تحقیق ہو گی ہم سارے ثبوت سامنے لائیں گے ، 1970کے انتخابات کے علاوہ تمام انتخابات متنازعہ تھے ۔ انھوں نے کہا کہ ہم خیبر پختون خواہ میں نیا نظام لارہے ہیں جس کے تحت تمام وزیر مہینے میں ایک بار ٹیلی فون پر عوام کے مسائل سنیں گے۔ ہم اپنے وزیر وں کو کہیں گے ریڈیو پروگرام کے ذریعے لوگوں کی ٹیلیفون کالز سنیں اورلوگوں کے مسائل سنیں ، لوگ جب براہ راست فون کالز کے ذریعے اپنے مسائل بتائیں گے تو پتا چلے گا کہ صوبے کے کس علاقے میں مسائل موجود ہیں ، انہوں نے کہا کہ بنوں میں سکول بند پڑا تھا اب اس کھول دیا گیا اب بچے تعلیم حاصل کریں گے ، مہینے میں ایک دفعہ وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا بھی ریڈیوپروگرام میں شریک ہونگے اور لوگوں کے مسائل دریافت کریں گے ، وزیر تعلیم عاطف خان ریڈیو پروگرام میں آئیں گے تو ان سے سکولوں کی بندش کے حوالے سے سوال کیا جائے

مزید : صفحہ اول