تحریک انصاف اور حکومت کے درمیان ہونے والے معاہدے کی تفصیلات سامنے آ گئیں

تحریک انصاف اور حکومت کے درمیان ہونے والے معاہدے کی تفصیلات سامنے آ گئیں
تحریک انصاف اور حکومت کے درمیان ہونے والے معاہدے کی تفصیلات سامنے آ گئیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستان تحریک انصاف اور حکومتی جماعت مسلم لیگ ن کے درمیان جوڈیشل کمیشن بنانے پر اتفاق ہو گیا ہے جبکہ ذرائع کے مطابق بتایا گیا ہے کہ دونوں جماعتوں کے درمیان ہونے والا معاہدہ 7 صفحات پر مشتمل ہے۔اس معاہدے کے مطابق جوڈیشل کمیشن انتخابی دھاندلی سے متعلق 45 دنوں میں فیصلہ کرے گا جبکہ دھاندلی ثابت ہونے پر وزیر اعظم نواز شریف خود اسمبلیوں کو توڑنے کا اعلان کریں گے۔معاہدے کی شق کے مطابق دھاندلی ثابت ہوے پر اسمبلیوں کی تحلیل سمیت پورے ملک میں ایک ہی وقت میں انتخابات کروائے جائیں گے جبکہ جبکہ مجوزہ آرڈیننس کو بھی معاہدے کا حصہ بنا دیا گیا ہے۔

انٹرا پارٹی الیکشن میں دھاندلی کو تسلیم کرتے ہیں ، اگلا الیکشن نیا الیکشن کمیشن کروائے گا : شاہ محمود قریشی

تحریک انصاف اور حکومت کے درمیان ہونے والے معاہدے کے مطابق انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لیے ایم آئی اور آئی ایس آئی کو بھی شامل کیا جائے گا جبکہ معاہدے کی  شق کے مطابق حکومت ڈی جی ایف آئی اے اور سیکرٹری الیکشن کمیشن بھی پی ٹی آئی کی مشاورت سے لگایا جائے گا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ اس معاہدے میں بلوچستان نیشنل پارٹی اور پیپلز پارٹی کے لیے دستخط کرنے کی جگہ بھی موجود ہیں جبکہ ان دونوں جماعتوں سے کل اس معاہدے ہر دستخط لیے جائیں گے۔

مزید : قومی /اہم خبریں