’’پاکستان کی بقا اور استحکام نظریہ اسلام سے وابستہ ہے‘‘

’’پاکستان کی بقا اور استحکام نظریہ اسلام سے وابستہ ہے‘‘

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار) قومی‘ سیاسی ،مذہبی رہنماؤں اور وکلاء قیادت نے کہا ہے کہ پاکستان کی بقا اور استحکام صرف نظریہ اسلام سے وابستہ ہے جس پر ملک بنا تھا۔ آج ہمیں جس دہشت گردی یا اندرونی و بیرونی مسائل کا سامنا ہے، ان سب کا حل ملک میں لا الہ الا اللہ کے کلمہ کو رائج کرنے میں ہے۔23مارچ کے قومی دن کی مناسبت سے لاہور ہائی کورٹ کے کراچی شہدا ء ہال میں نظریہ پاکستان لائرز فورم کے زیر اہتمام ’’نظریہ پاکستان سیمینار‘‘ میں بڑی تعداد میں وکلا ء شریک ہوئے جہاں بانی پاکستان قائد اعظم کے فرمودات کے مطابق ملک کو ہر لحاظ سے اسلامی بنانے کا مطالبہ کیا گیا۔سیمینار سے تحریک انصاف کے اعجاز چوہدری، صدر لاہور ہائیکورٹ بار چودھری ذوالفقار علی، راؤ تجمل عباس ، حافظ مسعود کمال، ڈاکٹرعبدالغفور راشد ‘احمد اویس‘ عبدالرشید قریشی، علی عمران شاہین، حافظ طلحہ سعید، راؤ طاہر شکیل‘ راشد لودھی، ایم ظہیر بٹ ‘میاں محمد اشرف عاصمی، ملک منصف اعوان ،اللہ بخش گوندل و دیگر نے خطاب کیا۔سیمینار کی صدارت صدر لاہور ہائیکورٹ بار چودھری ذوالفقار علی جبکہ میزبانی صدر نظریہ پاکستان لائرز فورم راؤ تجمل عباس نے کی، صدارتی خطاب میں چودھری ذوالفقار علی نے کہا کہ ہم سب نے مل کر پاکستان کو اسلام کی بنیاد پر مضبوط بنانا ہے۔ پاکستان میں قانون کے ساتھ بھی کھیل کھیلا جارہا ہے، آئین توڑا جارہا ہے نبیؐ کی شان میں گستاخی کرنے والوں کو باعزت طریقے سے پاکستان سے باہر بھیجا جارہا ہے ۔ حکمران مغرب کے اشاروں پر چل رہے ہیں۔تحریک انصاف کے مرکزی رہنماء اعجاز چوہدری نے کہا کہ اگر پاکستان تیسری دفعہ وزیر اعظم بننے والا شخص کہے کہ ایشور ،بھگوان،خدا،سب ایک ہیں۔تواس پر ہم سب کیوں خاموش ہوجاتے ہیں۔جو شخص نظریہ پاکستان پیروں تلے روند رہا ہے وہ کیا نظریہ پاکستان اوراسلامیان پاکستان کی حفاظت کرے گا ۔حافظ مسعود کمال الدین نے خطاب میں کہا کہ نظریہ پاکستان کا بنیادی مقصدیہ ہے کہ ہم اس نظریہ کو نئی نسل میں اجاگر کریں۔آج بڑے بڑے تھنک ٹینک کوششیں کررہے ہیں کہ نظریہ پاکستان کو ختم کیا جائے اور پاکستان کو سیکولر پاکستان بنایا جائے ۔ مرکزی جمعیت اہلحدیث کے مرکزی رہنماعبدالغفور راشد نے کہا کہ مسلمان ہونے کے ناطے گستاخانہ بلاگرز کے خلاف آواز بلند کریں ۔ علی عمران شاہین نے کہا کہ23مارچ کا دن ہمارے لئے فیصلہ کن دن ہے ۔پاکستان کلمہ طیبہ کی بنیاد پر معرض وجود میں آیا ہے ۔حافظ طلحہ سعید نے کہا کہ آج جماعۃ الدعوۃ اور حافظ محمد سعید کی وہ عالمی قوتیں دشمن ہیں جو نظریہ پاکستان کے خلاف سازشیں کررہی ہیں ۔آج پاکستان کے بنیادی نظریے کو کھوکھلا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔لاہور ہائی کورٹ بار کے سابق صدر احمد اویس نے کہا کہ ہمیں آج اپنے دوست اور دشمن کی پہچان کرنا ہوگی ۔ آج وکلاء پاکستان کی طاقت ہیں ۔عبدالریشد قریشی نے کہا کہ نریندر مودی نے دو قومی نظریہ واضح کردیا ‘وہاں آج مسلمانوں پر ظلم ہورہا ہے ۔دیگر مقررین نے کہا کہ کہ ہماری قومی ذمہ داری ہے کہ ہم نظریے کے تحفظ کے لئے اٹھ کھڑے ہوں۔

مزید :

صفحہ آخر -