حدیبیہ پیپر ملز کیس،نیب نے اپنی سبکی کے خدشہ کے باعث اپیل دائر نہ کی

حدیبیہ پیپر ملز کیس،نیب نے اپنی سبکی کے خدشہ کے باعث اپیل دائر نہ کی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد(خصوصی رپورٹ) قومی احتساب بیورو نے حدیبیہ پیپر ملز کیس کیخلاف اپیل ادارہ کی بدنامی کے خدشہ کے باعث دائر نہ کی ۔اس ضمن میں نیب کے ریکارڈ کے مطابق چیئرمین احتساب بیور و قمر زمان چوہدری کو پراسیکیوٹر جنر ل نیب نے بتایا کہ شریف خاندان کیخلاف مذکورہ کیس اپیل دائر کرنے کیلئے فٹ نہیں کیونکہ نیب عدالت عظمیٰ سے صرف اس ضمن میں دوبارہ انوسٹی گیشن کی ہی استدعا کر سکتا ہے اوردوبارہ تحقیقات ادارہ کی بدنامی کا ہی باعث بنے گی ۔جس پر چیئرمین نیب نے شریف خاندان کیخلاف اپیل دائر نہ کرنیکا فیصلہ کرتے ہوئے لکھا کہ کیس کی پراسکیوش چونکہ مبہم اور غیر واضح ہیں ،اس کی تحقیقات کے دوران کئی غیر قانونی اقدامات کی بھی نشاندہی ہوئی ہے ۔جبکہ 2015ء میں نیب کے پراسیکیوشن جنرل نے تحریری طور پربتایا کہ لاہور ہائیکورٹ کا ڈویژن بنچ بھی کیس کی دورباہ تحقیقات کیخلاف فیصلہ دے چکا ہے ،اسی طرح 2014ء میں بھی کیس کے حوالے سے دائر کردہ پیٹشن اور دیگر اسی نوعیت کی درخواستوں کی سماعت کے بعد بھی عدالتیں اس حوالے سے کہہ چکی ہیں کہ دوبارہ تحقیقات نہیں کی جا سکتیں ۔ان ہی وجوہات کی بنا پر چیئرمین نیب قمر زمان چوہدری نے فیصلہ کیا کہ اپیل نہیں کی جائیگی ،اس کے ساتھ ہی یہ تحریر کیا کہ چونکہ پراسیکیوشن نے متفقہ طور پر رائے دی ہے کہ دوران تحقیقات کئی غیر قانونی اقدامات کئے گئے ہیں عدالتیں بھی اس ضمن میں اپنی رائے اور فیصلہ دے چکی ہیں لہٰذاکیس کے حوالے سے اپیل کرنا بے فائدہ فعل ہوگا۔جبکہ اس قدر پرانے کیس کی صورت میں حقائق کی تلاش بھی ممکن نظر نہیں آتی اس لئے کیس کیخلاف اپیل نہ کئے جانے کی پراسیکیوشن کی رائے سے متفق ہوں۔

مزید :

صفحہ آخر -