فوجی عدالتوں کے قیام پرکوئی ڈیل نہیں ہوئی، اعتزاز احسن

فوجی عدالتوں کے قیام پرکوئی ڈیل نہیں ہوئی، اعتزاز احسن

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


اسلام آباد (آن لائن)پاکستان پیپلزپارٹی کے راہنمااعتزازاحسن نے کہاہے کہ فوجی عدالتوں کے قیام پرکوئی ڈیل نہیں ہوئی ،فوجی عدالتوں کاقیام عوامی رائے اورہماری مجبوری تھی ،حکومت نے بل پرپیپلزپارٹی سے تاوان لیا،سندھ اورپنجاب مین رینجرزکے اختیارات میں فرق ہے ،چوہدری نثارکی تقاریربھی اورعمل صفرہے ،پنجاب میں پیپلزپارٹی کاوزیراعلیٰ ہوتاتوسخت آپریشن ہوتا۔نجی ٹی وی کودیئے گئے انٹرویومیں انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی نے فوجی عدالتوں کے قیام کے بل کی مخالفت پرعوامی ردعمل کاسامناکیا،عوامی رائے ہے کہ فوجی عدالتیں تحفظ فراہم کرتی ہیں ۔انہیں قائم ہوناچاہئے ،فوجی عدالتوں کے قیام میں توسیع ہمارے لئے مجبوری تھی ۔انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی نے فوجی عدالتوں کے قیام کے بل میں ترامیم پیش کیں ،فوجی عدالتوں کے بل پرکوئی ڈیل نہیں ہوئی ،حکومت نے بل پرپیپلزپارٹی سے تاوان لیاہے ۔انہوں نے کہاکہ چوہدری نثارہمارے مطالبے کے حوالے سے بھی تقریرکرتے رہے ہیں ،نیشنل ایکشن پلان کسی ایک صوبے کیلئے نہیں تھا،پلان پرعملدرآمدوزارت داخلہ کی ذمہ داری تھی،چوہدری نثارکی تقاریربھی مگرعمل صفرہے ۔انہوں نے کہاکہ موجودہ نظام میں شریف برادران کے خلاف کسی کارروائی کی توقع نہیں،پنجاب میں پیپلزپارٹی کاوزیراعلیٰ ہوتاتوسخت آپریشن ہوتااگرراناثناء اللہ سندھ کے وزیرہوتے توآج انہیں اٹھالیاگیاہوتااوروہ جیل میں ہوتے ۔انہوں نے کہاکہ سندھ میں وزراء کورینجرزنے گرفتارکیاان کے دفاترسے فائلیں لیپ ٹاپ اورکمپیوٹربھی اٹھائے گئے ان پردہشتگردی اورکرپشن کے الزامات لگائے گئے ،پنجاب میں رینجرزکواس طرح کی کارروائی کی اجازت ملے گی ؟اعتزازحسن نے کہاکہ پیپلزپارٹی کے وزیراعظم کوہٹایاگیاحامدسعیدکاظمی کوگرفتارکیاگیاوہ کل بری ہوگئے اورعدالت نے انہیں الزامات سے بری کیا ۔