فیس بک ہم سے پیسہ کما رہی ہے اورہمیں ہی جوتیاں بھی مار رہی ہے: جسٹس شوکت عزیز صدیقی

فیس بک ہم سے پیسہ کما رہی ہے اورہمیں ہی جوتیاں بھی مار رہی ہے: جسٹس شوکت عزیز ...
فیس بک ہم سے پیسہ کما رہی ہے اورہمیں ہی جوتیاں بھی مار رہی ہے: جسٹس شوکت عزیز صدیقی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کیس کی سماعت کرتے ہوئے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ فیس بک تعاون نہیں کرتی تو پاکستان میں بند کردیں، کیس کی آئندہ سماعت 27 مارچ کو عدالت فیصلہ کرے گی کہ سوشل میڈیا چلنا چاہئے یا نہیں۔ اگر سیلفیاں اور ڈشز کی تصاویر فیس بک پر شیئر نہ کی گئیں تو کچھ نہیں ہو گا۔ پاکستان کی نظریاتی سرحدوں کی حفاظت کرنا کیا ہماری ذمہ داری نہیں؟۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبا د ہائیکورٹ میں سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کیس کی سماعت ہوئی۔ سیکریٹری داخلہ عارف خان،سیکریٹری انفارمیشن اورایف آئی اے حکام عدالت میں پیش ہوئے،مذہبی جماعتوں کے رہنماءبھی عدالت میں موجود تھے۔اس موقع پر سیکرٹری داخلہ نے عدالت کو بتایا کہ ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کرلیا ہے،کیس حساس ہے اس لئے محتاط انداز میں تحقیقات کررہے ہیں۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیئے کہ عدالت کی معاونت کرنیوالوں کو احترام کرتا ہوں ،حساس معاملہ ہے تو کیا کارروائی نہیں کریں گے؟۔سیکرٹری داخلہ نے جواب دیا کہ گرفتار ملزمان کیخلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے،گرفتار شخص کے لیپ ٹاپ کا معائنہ کیا جارہا ہے،آج مزید 2 سے 3 گرفتاریاں ہونے کا امکان ہے،ہم نے خفیہ اداروں کی بھی مدد لی ہے۔

سیکرٹری داخلہ نے مزید بتایا کہ 3 مشتبہ افراد کی مسلسل نگرانی کی جارہی ہے جبکہ مقدمے میں توہین رسالت اور دہشتگردی کی دفعات شامل کی گئی ہیں اور کچھ لوگوں کے نام ای سی ایل میں ڈال دیئے ہیں۔جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے کیس کی سماعت پیر تک ملتوی کرتے ہوئے سیکرٹری داخلہ سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔انہوں نے ریمارکس دیئے کہ پولیس ،ایف آئی اے سمیت ہر ادارہ دوسرے پر ذمہ داری ڈال رہا ہے،فیس بک تعاون نہ کرے تواسے پاکستان میں بند کردیا جائے،آئندہ سماعت پر فیصلہ کریں گے کہ سوشل میڈیا چلنا چاہیے یا نہیں،جغرافیائی کے ساتھ نظریاتی سرحد کی حفاظت بھی ضروری ہے،جغرافیائی سرحد پر کروڑوں روپے خرچ ہوتے ہیں،نظریاتی سرحد پر بھی کچھ کرلیں۔عدالت نے کیس کی سماعت پیر تک ملتوی کردی ہے۔

مزید :

اسلام آباد -