قیمتوں میں فرق ،مہنگی دواء خریدنے کیخلاف تحریک التواء کار جمع

قیمتوں میں فرق ،مہنگی دواء خریدنے کیخلاف تحریک التواء کار جمع

  

لاہور(نمائندہ خصوصی )پاکستان تحریک انصاف وسطی پنجاب کے سیکرٹری اطلاعات اور رکن پنجاب اسمبلی ڈاکٹر مراد راس نے ایک تحریک التوائے کار پنجاب اسمبلی میں جمع کروا دی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نجی چینل کی خبر کے مطابق ایک ہی فارماسوٹیکل کمپنی اور ایک ہی دوا ہونے کے باوجود خیبرپختونخواہ اور پنجاب میں رواں مالی سال کے دوران ادویات کی خریداری میں قیمتوں میں زمین و آسمان کا فرق ہے۔ اماکسی سلین سیرپ خیبرپختونخواہ نے تینتیس روپے بتیس پیسے اور پنجاب نے ساٹھ روپے میں خریدا۔

، جس سے خزانے کو تیرہ کروڑ اکہتر لاکھ روپے کا نقصان ہوا۔ سیفٹریکزون انجکشن کے پی کے نے بائیس روپے اور پنجاب نے اناسی روپے میں خریدا۔ جس سے پنجاب کے خزانے کو اکسٹھ کروڑ پچاسی لاکھ روپے کا نقصان ہوا۔ ڈکلوفینک سوڈیم ٹیبلٹ کے پی کے نے اکتیس پیسے اور پنجاب نے پونے چار روپے میں خریدی جس سے خزانے کو اکاون کروڑ پچانوے لاکھ کا نقصان ہوا۔ بروفین ٹیبلٹ کی خریداری میں بھی پنجاب کو تئیس کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔ مجموعی طور پر دونوں صوبوں کی ایک ہی کمپنی کی اٹھائیس ادویات کی خریداری میں قیمتوں میں بہت زیادہ فرق ہے۔ محکمہ پرائمری ہیلتھ اس سے قبل بھی ہیپاٹائٹس کی دوا کے پی کے کے مقابلے میں فی ٹیبلٹ ساڑھے چھ روپے مہنگی خرید چکا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -