عدالتی فیصلے کیخلاف بولنا میرا حق ، اب تو سپریم کورٹ کے اندر سے بھی آوازیں اٹھ رہی ہیں : نواز شریف

عدالتی فیصلے کیخلاف بولنا میرا حق ، اب تو سپریم کورٹ کے اندر سے بھی آوازیں ...

  

اسلام آباد(آئی این پی )مسلم لیگ (ن) کے قائد اورسابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ نااہلی سے متعلق عدالتی فیصلے کے خلاف بولنا میرا اور میری پارٹی کا حق ہے، میرے خلاف بلیک لاء ڈکشنری کا سہارا لے کر فیصلہ لکھا گیا ، عوام کی توہین ہوئی ہے وہ اپنی توہین کہاں فائل کریں، اب تو سپریم کورٹ کے اندر سے بھی آوازیں آرہی ہیں،28جولائی کے عدالتی فیصلے کے باعث ڈالر116روپے پر چلا گیا، عمران خان نے اقبال جرم کیا پھر بھی صادق اور امین ٹھہرے، عمران خان غلطی تسلیم کررہے تھے لیکن عدالت نے کہا کہ اس طرف نہ جائیں، سب پر باتیں کرنے والوں کا اپنا کیس سامنے آگیا ،اس نے کروڑوں روپے کی زمین چھپائی۔ وہ بدھ کو احتساب عدالت کے اندر صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کررہے تھے ۔اس دوران نواز شریف کا کہنا تھا کہ میں اداروں کی عزت کرنیوالا انسان ہوں لیکن میرے خلاف جو فیصلہ آیا وہ میری اور قوم کی نظرمیں ٹھیک نہیں تھا۔ میرے خلاف بلیک لا ڈکشنری کا سہارا لے کر فیصلہ لکھا گیا۔ اب میرے خلاف توہین عدالت کیس میں فل بینچ بنادیا گیا ہے۔ عوام کی توہین ہوئی ہے وہ اپنی توہین کہاں فائل کریں۔نوازشریف نے کہا کہ اب تو سپریم کورٹ کے اندر سے بھی آوازیں آرہی ہیں۔ گزشتہ روز جج صاحب کے ریمارکس سب کے سامنے ہیں، ان کے ریمارکس معمولی نہیں ،جسٹس فائز نے کہا کہ کیس پاناما کا تھا اور نااہلی اقامہ پر کی گئی، جنہوں نے مجھے اقامے پر نکالا انہوں نے نیب ریفرنس بھی بناکر بھیجے۔ فیصلے دینے والوں کو سوچنا چاہئے کہ قوم کو ان کے فیصلے تسلیم نہیں۔سابق وزیر اعظم نے کہا کہ عمران خان نے اقبال جرم کیا پھر بھی صادق اور امین ٹھہرے، عمران خان غلطی تسلیم کررہے تھے لیکن عدالت نے کہا کہ اس طرف نہ جائیں، سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین کو نااہل کیا لیکن اس پر کوئی جے آئی ٹی نہیں بنائی، سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین کیخلاف نیب ریفرنسز دائر کرنے کا بھی نہیں کہا یہ دوہرا معیار نہیں چلے گا۔نواز شریف نے شیخ رشید کا نام لئے بغیر ان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ جو سب پر باتیں کررہے تھے ان کا اپنا کیس سامنے آگیا ہے،انہوں نے کروڑوں روپے کی زمین چھپائی۔انہوں نے کہاکہ شیخ رشید کے پلاٹس کی قیمت 5کروڑ بتائی جارہی ہے بڑے بڑے نامور وکلاء نے کہا کہ کیسز کمزور ہیں اور فیصلہ بھی کمزور ہے۔ کمزور فیصلوں پر تنقید نہیں ہوگی تو پھر کیا ہوگا۔ ایسے فیصلے کروڑوں عوام کی بھی توہین ہے۔ عوام کی بھی توہین ہو تو ان کے پاس بھی فورم ہونا چاہئے جہاں وہ توہین فائل کریں۔ 28جولائی کو پاکستان کے عوام کی توہین ہوئی اسی طرح کے فیصلے عدلیہ کی بدنامی کا باعث بنتے ہیں اس فیصلے کے انتشار کی وجہ سے آج ڈالر 116 روپے پر چلا گیا۔ ہمارے زمانے میں چار سال ڈالر ایک جگہ پر قائم رہا ایسے فیصلے ابتری‘ مشکلوں اور مصائب کا باعث بنتے ہیں۔ ایسے فیصلوں سے ہمارا ملک دنیا میں بدنام اور تنہا ہورہا ہے۔ ہمارے زمانے میں پاکستان عزت کا مقام حاصل کررہا تھا آج پاکستان کا کوئی حال نہیں ہے۔

نوازشریف

اسلام آباد (آئی ا ین پی) مسلم لیگ (ن) کی رہنما اور سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہاہے کہ پانامہ کیس میں منتخب وزیراعظم کے ساتھ ناانصافی ہوئی‘ فیصلے کے اثرات ملک پر پڑے‘ لوگوں پر بھی پڑیں گے‘ پانامہ فیصلے کی زد میں اب بڑی دنیا آئے گی‘ ہم نہیں چاہتے ہمارے مخالفین کے ساتھ زیادتی ہو۔ وہ بدھ کویہاں احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کررہی تھیں ۔انہوں نے کہا کہ پوری قوم دیکھ رہی ہے کہ پانامہ کیس میں اقامہ پر نااہلی ہوئی۔ پانامہ کے فیصلے کی زد میں اب بڑی دنیا آئے گی پانامہ کے فیصلے میں منتخب وزیراعظم کے ساتھ ناانصافی ہوئی ہم نہیں چاہتے کہ ہمارے مخالفین کے ساتھ بھی ناانصافی ہو۔ ہم نہیں چاہتے کہ پانامہ فیصلے کے اثرات کسی پر پڑیں پانامہ فیصلے کے اثرات ملک پر بھی ہوئے لوگوں پر بھی پڑیں گے۔

مریم نواز

مزید :

صفحہ اول -