2018ء میں شریفوں سے پنجاب کو آزاد کرائیں گے : عمران خان

2018ء میں شریفوں سے پنجاب کو آزاد کرائیں گے : عمران خان

  

لدھیوالہ وڑائچ، مریدکے، کامونکی (طارق عزیز چوہان سے ، نامہ نگاران ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے لدھیوالہ وڑائچ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا زرداری اور نواز شریف کا ٹولہ 30سال سے لوٹ مار میں مصر و ف ہے،شریف خاندان کا 30ہزار کروڑ روپیہ باہر کے ملکوں میں پڑا ہوا ہے ان کے پاس اتنا مال کہاں سے آیا قوم کو بتانے کی بجائے الٹا کہہ رہے ہیں مجھے کیوں نکالا ۔ اپنا علاج بیرون ملک کروانے والے قوم کو بتائیں اس ملک کے غریب عوام اپنا علاج کروانے کیلئے کہاں جا ئیں 30سال سے حکومت میں رہنے والوں نے ایک بھی ہسپتال نہیں بنایا ۔دس سالوں میں چھ ہزار ارب روپیہ ڈویلپمنٹ کے نام پر کر پشن کی نذر کردیا گیا ۔ دنیا بھر میں بیماریوں کا شکار ہو کر سب سے زیادہ بجے پاکستان میں مرتے ہیں ۔ نواز شریف کو قائد اعظم ثانی کہنے وا لے ڈرامہ باز شہباز شریف کو شرم آنی چاہیے ۔قائد اعظمؒ نے مرنے سے قبل اپنی ساری جائیداد ملک کے فلاہی اداروں کو عطیہ کردی تھی جبکہ شریف خاندان نے ملک کی دولت خود لوٹ کر باہر کے بنکوں میں غائب کردی ۔ ہمارے نوجوانوں کو اچھے روزگار اور ملازمتوں کی ضرورت ہے ہمیں مدینہ والی ریاست چاہیے جہاں ہر کسی کو انصاف ملتا تھا ۔ ہم اقتدار میں آکر میٹرو اور اورنج ٹرین کی بجائے انسانوں پر پیسہ خرچ کرینگے اور اعلیٰ تعلیم کیلئے یونیورسٹیاں قائم کرینگے تاکہ علم کے ذریعے دہشت گردی کا مقابلہ کرینگے ۔ عمران خان نے میاں طارق محمود کی طرف سے ملنے والے 20تولے سونے کا ہار اور میاں مظہر جاوید کی طرف سے چاندی کا بلا شوکت خانم ہسپتال کو عطیہ کردیا ،عمران خان نے میاں طارق محمود ایم این اے اور سابق ایم پی اے میاں مظہر جاوید کو ہزاروں کارکنوں سمیت پاکستان تحریک انصاف میں خوش آمدید کہتا ہوں اور وقت ثابت کریگا کہ ان کا فیصلہ درست تھا۔میاں طارق محمود ایم این اے نے اپنے خطاب میں کہا گوجرانوالہ اب (ن ) کا نہیں بلکہ جنون والوں کا قلعہ ہے انہوں نے جلسہ میں عمران کو استعفیٰ پیش کرتے ہوئے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو اپنے مقابلے میں الیکشن لڑنے کا چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ ووٹ کو عزت دینے کی بات کرنیوالے خود اس پر عمل نہیں کرتے ۔ میاں طارق محمود نے کہا شریف برادران کا اپنے ممبران ممبران اسمبلی اور پارٹی ورکروں کیساتھ انتہائی توہین آمیز رویہ ہوتاہے ۔میں چیلنج کرتا ہوں پانچ سال سے اپنی ذات کیلئے فائدہ حاصل کیا ہوتو ثابت کریں ہمارے اثاثے چوری کے نہیں ۔قبل ازیں لاہور سے گوجرانوالہ جاتے ہوئے میاں خالد جاوید کی قیادت میں جی ٹی روڈ پر آنیوالے پی ٹی آئی کارکنوں سے خطاب کرتے عمران خان کا کہنا تھا پاکستان کو شریفوں اور زرداریوں نے دو ہاتھ سے لوٹا آج ملک دیوالیہ ہونے کی سطح پر پہنچ گیا ہے نواز شریف کا ہر منصوبہ کرپشن کی داستان ہے قوم پر نواز شریف ٹولہ اور زرداری ٹولہ نے کبھی رحم نہیں کیا انکو بس اپنی تجوریاں بھرنے کی فکر ریتی ہے قوم کو شریف برادران بیوقوف بنا کر کہتے رہے کہ زرداری کا پیٹ پھاڑ کر لوٹی دولت واپس لیں گے مگر شریف برادران کی مہربانی سے زرداری پانچ سال مزے سے اقتدار میں رہا شریف برادران خاموش رہے کیونکہ دونوں نے ایک معاہدے کے تحت قوم کو بیوقوف بنایا اور تحفظ دیکر لوٹ مار کا کھیل کھیلا شریف برادران کو توقع ہی نہیں تھی انہیں حساب دینا پڑے گا حساب دینا پڑگیا زر د ا ری کو بھی حساب دینا پڑے گا ،قوم سب جان چکی ہے 2018 کے انتخابات میں ووٹ کی طاقت سے بتادیں گے کہ اب کسی لٹیرے کی یہا ں جگہ نہیں ہے شریف برادران اور زرداری ٹولہ یا تو لوٹی دولت واپس کرے گا یا جیل جائے گا عمران خان کی آمد پر پی ٹی آئی کارکنوں نے زبردست نعرہ بازی کی آتش بازی اور گھوڑوں کے رقص پر عمران خان خوش ہوکر کارکنوں کو ہاتھ ہلا کر جواب دیتے رہے۔بعد ازاں سما جی را بطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ پیغام اور کامونکی میں جلسے سے خطاب میں چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے نوازشریف کو کیو ں نکالا کردیا اب شہبا زشریف کی باری ہے۔ عمران خان نے شہبازشریف اپنا چیک اپ کرانے لندن گئے ہیں، انہوں نے گزشتہ 10 بر سوں میں پنجاب پر ساڑھے 6 ہزار ارب روپے خرچ کیے لیکن کوئی جدید ہسپتال نہیں بنایا، کلثوم نواز بھی بیمار ہوکر لندن چلی گئیں، مگر ہم نے 450 ارب میں پشاور میں جدید ترین ٹیکنالوجی سے لیس شوکت خانم ہسپتال بنایا ۔ ملتان میں میٹرو عوام کی سہولت کیلئے نہیں بنی، شہبا ز شر یف نے منصوبے پیسہ چوری کرکے باہر بھیجنے کیلئے اسے بنایا۔ 2018 میں شریفوں سے پنجاب کو آزاد کرانا ہے، نوازشریف کو بتائیں گے انہیں کیوں نکالا، الیکشن مہم میں ایک ایک کرکے بتاؤں گا انہیں کیوں نکالا۔ عمران خان نے ایک بار پھر آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم میں نیب کے ہاتھوں گرفتار سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کو شہبازشریف کا فرنٹ مین قرار دیااورکہااحد چیمہ نیب کی تحویل میں ہیں، ان کے ممکنہ انکشافات کے تصور سے شہبازشریف پرکپکپی طاری ہوتی ہوگی۔ گزشتہ 10 برسوں سے ساڑھے 6 کھرب کے ترقیاتی فنڈز شہبازشریف کی مٹھی میں ہیں، ان کے بارے میں اب تک آنیوالی اطلاعات تو ابتداء ہے، ہم جلد سراغ لگالیں گے کہ ان میں سے کتنی رقم شریفوں کی جیبوں میں بھری گئی۔ ڈالر کی قیمت بڑھنے سے قرضہ پانچ سو ارب بڑھ گیا مہنگائی کا طوفان آئے گا۔ پنجاب کی وزیر صحت کا تعلق گوجرانوالہ ڈویژن سے ہے پنجاب میں 100 روپے میں ملنے والی دوائی کے پی کے میں پچاس روپے میں ملتی ہے۔ پنجاب میں عوام سے پیسہ بنایا جاتا ہے کرپشن بڑے کرتے ہیں اور بوجھ عوام اٹھاتے ہیں ۔ جو دولت بیرون ملک جارہی ہے وہ عوامی فلاح کے منصوبوں ‘ سکولوں ‘ ہسپتالوں ‘ روزگار ‘ پانی ‘ عدل و انصاف کے اچھے نظام پر خرچ کریں گے۔ ڈالر کی قیمت ایک روپے بڑھنے سے پاکستان پر قرض ایک ارب روپے بڑھتا ہے گزشتہ دنوں پاکستان پرمزید پانچ سو ارب کا قرضہ چرھ چکا ہے جو منشی اسحاق ڈار اور نواز شریف کی وجہ سے چڑھا ہے ۔ سپریم کورٹ کی جانب سے بیرون ملک چھپائی گئی دولت وطن واپس لانے اور ملوث افراد کے خلاف کارروائی کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں‘منی لانڈرنگ کے باعث پاکستان سالانہ 10ارب ڈالر کھو دیتا ہے۔ چیف جسٹس کا یہ اقدام قومی وسائل کی چوری روکنے میں کارگر ثابت ہوگا۔

مزید :

صفحہ اول -