ٹرمپ نے منشیات فروشوں کو موت کی سزا قانون بنانے کی تجویز دیدی

ٹرمپ نے منشیات فروشوں کو موت کی سزا قانون بنانے کی تجویز دیدی

  

واشنگٹن( اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی صدر ٹرمپ نے تجویز کیا ہے کہ امریکہ میں منشیات فروشوں کو موت کی سزا دینے کیلئے قانون بنایا جائے۔ ٹرمپ انتظامیہ نے کانگریس میں اپنے حامی ارکان کو اس سلسلے میں مسودہ قانون تیار کرنے کی باقاعدہ درخواست کر دی ہے جس پر جلد عملدر آمدشروع ہو جائے گا۔ منشیات کے استعمال اور کاروبار سے سب سے زیادہ متاثر ہو نے والی ریاست نیو ہمپشائر میں ایک تقریب سے خطاب آتے ہوئے صدر ٹرمپ نے منشیات فروشوں کے خلاف سخت ترین کارروائی کرنے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ منشیات کی اس فہرست میں ہیروئن اور دیگر نشہ آور منشیات کے ساتھ ساتھ افیون والی ایسی دوائیں بھی شامل ہوں گی جو درد کے ازالے کے لئے تجویز کی جاتی ہیں لیکن نشئی افرادان کا ناجائز استعمال کرتے ہیں۔ محکمہ صحت کے حکام کے مطابق OPIODSکے گروپ کے تحت آنے والی ان ادویات کو استعمال کرنے امریکیوں کی تعداد تقریباََچوبیس لاکھ ہے اور اس بحران کے باعث 2016ء میں 63ہزار سے زائد جانیں ضائع ہوئیں۔ قانونی ماہرین نے میڈیا پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ 1994ء میں کریک اور کوکین کے استعمال میں اضافے کے بعد منشیات کے سمگلروں کو پھانسی کی سزا دینے کا قانون ریاستوں میں موجود تھا لیکن گذشتہ 24برسوں میں اس پر عمل نہیں ہوا۔ اس قانون کو صد بل کلنٹن نے منظور کیا تھا۔

امریکہ

مزید :

علاقائی -