شجاع آباد کواپریٹو بنک ڈکیتی کے 4ملزم گرفتار،16کلو سونا برآمد

شجاع آباد کواپریٹو بنک ڈکیتی کے 4ملزم گرفتار،16کلو سونا برآمد

  

ملتان،شجاع آباد(کرائم رپورٹر، نمائندہ خصوصی ،نامہ نگار ) ریجنل پولیس آفیسر محمد ادریس احمدنے ڈسٹرکٹ پولیس لائن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا ہے کہ ملتان پولیس نے 3ماہ قبل شجاعباد(بقیہ نمبر43صفحہ7پر )

کوآپریٹو بینک غلہ منڈی ہونے والی ڈکیتی کے 4 ملزمان کا سراغ لگا کر انہیں گرفتار کرلیا ہے جبکہ ملزمان کے قبضے سے 16کلو گرام سونا برامد ہوا ہے،پریس کانفرنس کے دوران سی پی او ملتان سرفراز احمد فلکی، ایس ایس پی آپریشنز سیف اللہ خٹک، ایس پی سی آئی اے ڈاکٹر فہد مختار موجود تھے۔آر پی او ملتان کا کہنا تھا کہ پولیس نے ملتان کی تاریخ کی سب سے بڑی ڈکیتی کو ٹریس کر کے اپنا فرض نبھایا ہے،اس کی جتنی تعریف کی جائے کم ہے۔ واضح رہے کہ 3ماہ قبل 11دسمبر بروز منگل شجاع آباد میں دن دیہاڑے ڈکیتی کی واردات ہوئی ،جس میں6ملزمان نے اسلحہ کے زور پر بینک عملہ کو سٹرانگ روم میں بند کر کے سیف میں پڑا سونا جس کا وزن 22کلو گرام مالیتی 8کروڑ 31لاکھ اور 47ہزار کیش4موبائل فون اور ڈی وی آر چھین کر فرار ہوگئے تھے۔واقعہ پر آئی جی پنجاب نے نوٹس لیا تھا، جس پر انہوں نے سٹی پولیس آٖفیسر سرفراز احمد فلکی اور ایس پی سی آئی اے ڈاکٹر فہد مختار کو ملزمان کا سراغ لگانے کا ٹاسک دیا،جنھوں نے جدید ٹیکنیکل اور سائینٹفک طریقے سے مقدمہ میں ملوث ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ملزمان میں نسیم شاہ،محمد اصغر،منور مئیو اور بینک ملازم سجاد شامل ہیں۔گرفتار ملزمان نے دیگر کئی وارداتوں کا اعتراف بھی کیا ہے۔ان کے ہمراہی ملزمان کے نام کو صیغہ راز میں رکھا گیا ہے۔ دورا ن تفتیش ملزمان سے 16کلو گرام سونا برامد ہوا ہے۔جبکہ دیگر 2ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔ایک سوال کے جواب میںآر پی او ملتان کا کہنا تھا کہ ملزمان انتہائی خطرناک گینگ کے سربراہ مانا لنگاہ کے قریبی عزیز ہیں۔انہوں نے پچھلے سال بہاولپور بائی پا س پر دو پولیس کانسٹیبلوں کو فائرنگ کر کے زخمی کردیا تھا۔اس بینک ڈکیتی کے بعد ملزم محمد اصغر نے انہیں زیورات کو استعمال میں لا کر شادی بھی کرلی،تاہم حصے کے حوالے سے ان کا آپس میں کئی بار جھگڑا بھی ہوا۔بینک ملازم کی مدد سے یہ ڈکیتی انجام پائی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -