خیبر پختونخوا میں پیشہ ورانہ تعلیم کے فروغ میں نجی اداروں کا اہم کردار ہے

خیبر پختونخوا میں پیشہ ورانہ تعلیم کے فروغ میں نجی اداروں کا اہم کردار ہے

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)پشاور میں سیکاس یونیورسٹی کاکنووکیشن 2018، بدھ 21 مارچ 2018، کو شیراز ایرینا، ڈینز ٹر یڈنگ سینٹر پشاور صدر کے مقام پر منعقد ہوا۔انجنئیر اقبال ظفر جھگڑا، گورنر خیبر پختونخواہ اس موقع پر مہمان خصوصی تھے.دیگر اہم مہمانوں میں انجنیئر جاوید سلیم قریشی، چیئرمین پاکستان انجینئرنگ کونسل اور انجنئیر زاہد عارف، نائب صدر پاکستان انجنیئرنگ کونسل بھی شریک تھے۔ دیگر معزز مہمانوں میں مختلف یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرز، ڈینز، سیکٹریز ، بورڈ آف گورنرز کے ممبران، اساتذہ کرام اور گریجوئیٹ طلبا ء و طالبات بھی شامل تھے۔ سیکاس یونیورسٹی کے صد ر، انجنئیرمحمد تنویر جاوید نے مینجمنٹ سائنسز، کمپیوٹر سائنسز، کامرس، بایو ٹیکنیکل، آرکیٹیکچرل، سول، الیکٹریکل اور میکینیکل انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے 421 گریجویٹز کو بیچلر اور ماسٹرکی ڈگریاں عطا کیں اوران 46 طلباء و طالبات کو گولڈ میڈل اور کیش ایوارڈز سے نوازا ۔ جنہوں نے شاندار تعلیمی کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے متعلقہ مضامین میں پہلی پوزیشن حاصل کی تھی۔ اس موقع پر صدر سیکاس یونیورسٹی نے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی اور دیگر گراں قدر مہمانوں کو خوش آمدید کہا اور ان کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اپنی گونا گوں مصروفیات کے باوجود اس تقریب میں شرکت کی۔ ان کی آمد سیکاس یونیورسٹی ، طلباء و طالبات اور ان کے والدین لئے حوصلہ افزائی اور اعزاز کا باعث ہے۔صدر نے ناظرین کو بتایا کہ کس طرح 1986میں سیکاس کے تعلیمی ادارے نے ایک مختصر سے ادارے سے ترقی کی منازل طے کرتے ہوئے 31 اگست، 2001کوایک یونیورسٹی کی حیثیت حاصل کی۔انہوں نے ناظرین کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اب تک 35000

طلباء و طالبات سیکاس یورنیورسٹی سے فارغ التحصیل ہوچکے ہیں اور ان میں سے بہت سے مختلف سرکاری، نیم سرکاری اور پرائیویٹ اداروں میں اعلیٰ عہدوں پر تعینات ہیں۔ جب کہ تین ہزار طلبا ء و طالبات یونیورسٹی میں زیر تعلیم ہیں۔ گریجویٹز کو مبارکباد دیتے ہوئے صدر سیکاس یورنیورسٹی پشاور نے یونیورسٹی سے فارغ التحصیل گریجویٹوں پر زور دیا کہ وہ اب اپنی عملی زندگی میں داخل ہو جائیں اور حب الوطنی اور ایمانداری کے جذبے سے بھرپور ہو کر ملک و قوم کی خدمت کریں.

پروفیسر ڈاکٹر ریاض اے خٹک، وائس چانسلر، سیکاس یونیورسٹی پشاور نے طلباء و طالبات کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ اپنی عملی زندگی صداقت،دیانت ، محنت اور پیشہ وارانہ مہارت کے اصولوں کے تحت بسر کریں۔ سیکاس یونیورسٹی تعلیم کے میدان میں قومی سطح پر کردار ادا کرنے کے لئے معیار تعلیم کی بہتری، ریسرچ، صنعتی رابطوں اور بین الاقوامی تعلیمی تعلقات کی توسیع کے لئے قابل قدر فیکلٹی ممبرز کے تعاون سے اور ایچ ای سی کی رہنمائی میں پرعزم ہے۔ اب یہ فارغ التحصیل طلباء و طالبات کی زمہ داری ہے کہ وہ جذبہ حب الوطنی سے سرشار ہو کرملکی ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کریں اور سیکاس یونیورسٹی کا نام روشن کریں. ڈاکٹر خٹک وائس چانسلر CECOS نے تمام معززمہمانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کا شکریہ ادا کیا۔

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے، انجنیئر اقبال ظفر جھگڑا، گورنر خیبر پختونخواہ نے سیکاس یونیورسٹی کے تعلیمی اسنادکی تقسیم کے شاندار موقع پر انہیں مدعو کرنے کے لئے سیکاس یونیورسٹی یونیورسٹی کی انتظام کا شکریہ ادا کیا اور خیبر پختونخواہ کے صوبے میں پروفیشنل تعلیم کے فروغ کیلئے CECOS یونیورسٹی کی کوششوں کی بھی تعریف کی۔

اس موقع پر انجنیئر جاوید سلیم قریشی چیئرمین پاکستان انجینئرنگ کونسل نے ملک کی سماجی اور اقتصادی ترقی کے لئے کوالٹی ایجوکیشن کی اہمیت پر زور دیا اور سیکاس یونیورسٹی کی کوششوں کی تعریف کی ۔ انہوں نے تمام گریجویٹس کو ان کی ڈگری کورسزکی کامیاب تکمیل پر مبارکباد دی۔

پاکستان انجینئرنگ کونسل کے وائس چیئرمین انجنیئر زاہد عارف نے طلباء کو ان کے خصوصی دن کی بھی مبارکباد دی او پی سی ای کی انجنیئرزکے لئے کاوشوں کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔

آخر میں صدر سیکاس یونیورسٹی نے کنووکیشن 2018. کے خاتمے کا اعلان کیا .

مزید :

کراچی صفحہ اول -