2بھائیوں میں پیاز چوری پر ہونیوالی چار سالہ لڑائی ختم،2لاکھ میں صلح

2بھائیوں میں پیاز چوری پر ہونیوالی چار سالہ لڑائی ختم،2لاکھ میں صلح

  

کوٹ چھٹہ (نمائندہ پاکستان ) کوٹ چھٹہ کے نواحی علاقہ موضع ناڑی دھمرایہ میں دوسگے بھائیوں میں چار سال سے لڑائی کا موجب بننے والاایک پیاز ،4 سال بعدایک پیاز کی چوری (بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

کے عوض 2لاکھ روپے میں صلح ۔ تفصیل کے مطابق کوٹ چھٹہ کے نواحی علاقہ موضع ناڑی دھمرایہ میں دوسگے بھائیوں کے درمیان آپس میں لڑائی جھگڑاچار سال تک جاری رہا۔جب محمد شفیع چنڑ کے 6سالہ بیٹے محمد عرفان نے اپنے چچاکونسلرمحمد حسین چنڑکے کھیت سے ایک پیاز چوری کیا۔توکونسلر محمد حسین چنڑ نے اپنے بھائی اور بھتیجے کے خلاف تھانہ جھوک اترا میں ایک پیاز کی چٹی وصول کرنے کے لیے درخواست دے دی۔ عبدالعزیز خان چنڑنے دوبھائیوں کے درمیان آپس میں صلح کروائی توکونسلرمحمد حسین چنڑنے ایک پیاز کی چوری کے عوض اپنے بھائی محمد شفیع چنڑ سے پچیس ہزار روپے چٹی لینے کے بعد بھی اس کا پیٹ نہ بھرا ۔تو کونسلر محمد حسین اپنے سالے منظور احمد کے ساتھ مل کر اپنے سگے بھائی کو جان سے مارنے کا منصوبہ بناکر موقع ملتے ہی محمد شفیع چنڑ کے کپڑے پھاڑ کر ننگاکرکے تشدد کا نشانہ بنایا ۔تو اس وقت مضروب محمد شفیع نے تھانہ جھوک اترامیں مقدمہ درج کرانے کے لیے درخواست دی ۔تو بااثر کونسلر محمد حسین نے تھانہ جھوک اتراکی پولیس سے ساز باز ہوکرالٹامحمد شفیع کے بیٹے محمد حسنین کوتھانہ جھوک اترامیں گرفتار کراکر مجبوراََ صلح پر آمادہ کرکے 60ہزار روپے چٹی دے دی ۔پھر بھی آپس میں دو سگے بھائیوں کے درمیان لڑائی کا سلسلہ جاری رہا۔کونسلر محمد حسین نے 60ہزارروپے چٹی وصول کرنے کے لیے اپنے بھائی محمد شفیع کو اسلامک لاء کے جھوٹے میں مقدمہ میں پھنسوادیا ۔ محمد شفیع چنڑ نے عدالت سے عبوری ضمانت لے لی ۔مگرکونسلر محمد حسین کا اپنے بھائی پر غصہ ٹھنڈا نہ ہوا۔مزید موٹر سائیکل چوری کا جھوٹا مقدمہ تھانہ چوٹی زیرین میں درج کروا کرمحمد شفیع کے دوسرے بیٹے غلام یسین کو گرفتار کرالیا ۔بلاآخردونوں سگے بھائیوں کے درمیان آپس میں صلح کروانے کے لیے عبدالعزیز خان چنڑ کی کاوشوں سے ممبر صوبائی اسمبلی سردار محمود قادر خان لغاری کے بھائی سردارفضل قادر خان لغاری نے ایک پیاز کی چوری کے عوض 2لاکھ روپے کونسلر محمد حسین چنڑاور اسکے سالے منظورحسین کو دینے کا فیصلہ سنادیا ۔اور دونوں بھائیوں کو سینکڑوں کی تعدادکے مجمع میں آپس میں صلح کے بعد گلے ملادیا ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -