سپریم کورٹ نے بینظیر قتل کیس کے سزا پانے والے افسروں کی اپیل پر فیصلہ محفوظ کر لیا

سپریم کورٹ نے بینظیر قتل کیس کے سزا پانے والے افسروں کی اپیل پر فیصلہ محفوظ ...

  

اسلام آباد(آن لائن)سپریم کورٹ نے بینظیر بھٹو قتل کیس میں سزا پانے والے پولیس افسروں کی سزا کی معطلی کیخلاف اپیل پر فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔سپریم کورٹ میں کورٹ بینظیر بھٹو قتل کیس میں سزا پانے والے پولیس افسروں کی سزا(بقیہ نمبر15صفحہ12پر )

کی معطلی کیخلاف اپیل پر سماعت ہوئی، کیس کی سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی، رشیدہ بی بی کے وکیل لطیف کھوسہ نے کہا کہ بطور سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کو سکیورٹی ملتی تو یہ حادثہ پیش نہ آتا، اقوام متحدہ کے کمیشن رپورٹ کے مطابق جائے حادثہ کو محفوظ نہ رکھنا مجرمانہ فعل ہے، ہائی کورٹ نے تمام حقائق نظر انداز کر کے ملزموں کی سزا معطل کی۔ جائے حادثہ کو سازش کے تحت دھویا گیا،ملزموں کو بری تو کیا جاسکتا تھا لیکن سزا معطل نہیں کی جاسکتی، ملزم خرم شہزاد کے وکیل اعظم تارڑ نے کہا کہ لبرٹی ملزم کا بنیادی آئینی حق ہے، غفلت پر تادیبی کارروائی ہوتی ہے، ملزم سعود عزیز کے وکیل خالد رانجھا نے کہا کہ رشیدہ بی بی کو ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل کا حق حاصل نہیں، یہ حق صرف ریاست کا ہے، اقوام متحدہ کے کمیشن رپورٹ کی کوئی قانونی حیثیت نہیں، واقعہ مصروف شاہراہ پر ہوا، اس لیے کلیر کیا گیا، دلائل مکمل ہونے پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کرلیا ۔

بینظیر کیس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -