مردم شماری کے تیسرے فریق سے آڈٹ نہ کرانے پر تحفظات ہیں، پی پی پی

مردم شماری کے تیسرے فریق سے آڈٹ نہ کرانے پر تحفظات ہیں، پی پی پی

  

اسلام آباد (این این آئی،یو پی آئی)پاکستان پیپلز پارٹی نے مردم شماری 2017 ء کے 5 فیصد بلاک کی تیسرے فریق سے آڈٹ کرانے سے متعلق کیے گئے معاہدے پر عمل درآمد نہ ہونے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ تاج حیدرنے اپنے بیان میں کہا کہ مردم شماری 2017 ء پر بنائی گئی سینیٹرز کی نگران کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کے بعد مایوسی ہوئی۔ پاکستان مسلم لیگ ( ن) کے راجہ ظفر الحق کی سربراہی میں ہونے والے اس اجلاس میں اس بات پر تشویش کا اظہار کیا گیا کہ سندھ کے لوگوں کے حقوق کے صحیح طریقے سے اعداد و شمار کے بجائے انہیں مسخ کیا گیا۔تاج حیدر نے کہا کہ کمیٹی اجلاس میں اعداد و شمار ڈویڑن کے فوجی حکام کو اندر آنے کی اجازت دی گئی لیکن میڈیا کو اس کی کوریج سے دور رکھا گیا۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے خلاف اس سازش کو پہلے ہی تمام سیاسی جماعتوں نے مسترد کردیا تھا اور وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت اجلاس میں اس بات پر اتفاق ہوا تھا کہ صوبے کے ہر رہائشی کو شمار کرنے کے لیے حقیقی طریقہ کار کے معاہدے پر عمل کیا جائے گا۔ گزشتہ کئی دہائیوں سے دیگر صوبے مقامی سطح پر روزگار کے مواقع پیدا کر رہے ہی اور وہ اپنے بیروزگار لوگوں کو سندھ کی طرف بھیجنے کی پالیسی پر کاربند ہیں۔

تاج حیدر

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -