باغڈھیرئی ایریگیشن واٹر چینل پر جاری کام تاریخی سست روی کا شکار

باغڈھیرئی ایریگیشن واٹر چینل پر جاری کام تاریخی سست روی کا شکار

  

مٹہ ( رحیم خان ) باغڈھیرئی ایریگیشن واٹر چینل پر جاری کام تاریخی سست روی کا شکار منصوبہ شاید 2023میں مکمل ہوجائے نہر کی نقشے سے معلوم نہیں کہ کہی پر بھی اس نہر سے کسی کی زمینوں کو پانی مل جائے زمین متاثرین تاحال معاوضوں سے محروم احتجاج اور عدالت جانے کا اعلان نہر کیلئے کھدائی سے اگر ایک طرف زمینداروں کی زمینین بنجر ہوچکی ہے تو دوسری طرف ان زمینداروں کی زمینوں میں پڑی ملبے نے باقی زمین کو بھی بے کار بنادی ہے حکومت کے طرف سے عوام کیلئے یہ تاریخی منصوبہ اس وقت اور ائندہ کیلئے عوام ہی کیلئے مصیبت بن چکی ہے تاریخی سست روی سے ہونے والے کام کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا تفصیلات کے مطابق باغڈھیرئی ایریگیشن چینل جو یہاں کی عوام کی زمینوں کو پانی دینے اور لوگوں کو پینے کی پانی کیلئے ایک اہم منصوبہ جس سے بقول حکومت کئی ہزار ایکڑ زمینوں کو زیر کاشت لانے کیلئے متعدید اعلانات کی گئی تھی یہ منصوبہ اس وقت تاریخی سست روی کی شکار ہوکر عوام اور خاص کر ان زمینداروں کیلئے جہاں سے یہ نہر گزر چکی ہے ایک بڑی مصیبت بن گیا ہے اور اس وقت متاثرین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے کیونکہ اگر ایک طرف اس نہر کی کھدائی سے زمینداروں کی قیمتی زیر کاشت زمینیں کسی کام کی نہیں رہی تو دوسرے طرف اس نہر کی کھدائی کی ملبے سے ان زمینداروں کی باقی تھوڑی بہت زمین بھی کسی کام کی نہیں ہیں ادھر نہر پر تاریخی سست روی سے جاری کام کا اندازہ یہ ہے کہ باغڈھیرئی سے شروع ہونے والے اس نہر کی سیمنٹ کی کام اس وقت تلئے کی مقام تک اچکی ہے جو ایک کلومیٹر سے بھی کم فاصلہ ہے جبکہ زمینداروں کو تنگ کرنے کیلئے کھدائی ختم کی گئی ہے جو اس وقت ان متاثرہ زمینداروں کیلئے ایک بہت بڑی مصیبت بن چکی ہے کیونکہ کھدائی میں زیادہ منافع ہونے اور پختہ کرنے میں کم منافعے کی وجہ اب عوام کیلئے ایک بڑا امتحان بن چکاہے ادھر اس نہر کی گہرائی میں جانے سے اس بات میں کوئی شک نہیں کہ یہ نہر بنجر زمینوں کو زیر کاشت لانے کیلئے کسی کی زمین کو پانی نہیں دینگے کیونکہ اس وقت تو یہ نہر ایک کنویں کی منظر پیش کرتے ہیں دوسری جانب نہر سے متاثرین تاحال انکے قیمتی زمینوں کی معاوضے سے محروم ہے جس کیلئے ان متاثرین نے سڑکوں پر نکلنے اور عدالت جانے کا اعلان کیا ہے جو عنقریب سڑکوں پر نکل کر شدید احتجاج اور بعد میں انصاف ملنے کیلئے عدالت جائینگے

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -