کیسے افسرہیں؟وزیرکے زبان ہلانے پرپارک اکھاڑدیا،چیف جسٹس ثاقب نثار ڈی جی ایل ڈی اے پر برہم،ریکارڈ طلب

کیسے افسرہیں؟وزیرکے زبان ہلانے پرپارک اکھاڑدیا،چیف جسٹس ثاقب نثار ڈی جی ایل ...
کیسے افسرہیں؟وزیرکے زبان ہلانے پرپارک اکھاڑدیا،چیف جسٹس ثاقب نثار ڈی جی ایل ڈی اے پر برہم،ریکارڈ طلب

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ لاہور رجسٹری اسحاق ڈارکی رہائشگاہ کیلئے پارک اکھاڑکرسڑک بنانے پر ازخودنوٹس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثارڈی جی ایل ڈی اے پر برہم ہو گئے اور نجی ٹی وی کو اسحاق ڈار کے گھر کے قریب کی فوٹیج پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

چیف جسٹس آف پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ کیسے افسرہیں؟وزیرکی زبان ہلانے پرپارک اکھاڑدیا،آپ کوسزابھگتنی ہوگی،ذاتی پسندنہیں چلنے دوں گا،آپ کےخلاف نیب قوانین کے تحت کارروائی بنتی ہے

دوران سماعت ڈی جی ایل ڈی اے نے استدعا کرتے ہوئے کہا کہ میں عدالت سے غیرمشروط معافی مانگتاہوں۔

چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ عدالت سے معافی کاوقت گزرگیاہے ،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کس کے کہنے پرپارک اکھاڑکرسڑک بنائی گئی؟،اس پر ڈی جی ایل ڈی اے نے کہا کہ اسحاق ڈارنے سڑک کھلی کرنے کی درخواست کی تھی۔

چیف جسٹس آف پاکستان نے استفسار کیا کہ کیااسحاق ڈار نے تحریری طورپردرخواست دی تھی؟،ڈی جی ایل ڈی اے نے بتایا کہ اسحاق ڈار نے زبانی طورپرسڑک بنانے کاکہاتھا،چیف جسٹس نے برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ کیسے افسرہیں؟ وزیرکی زبان ہلانے پرپارک اکھاڑدیا،آپ کوسزابھگتنی ہوگی،ذاتی پسندنہیں چلنے دوں گا،آپ کےخلاف نیب قوانین کے تحت کارروائی بنتی ہے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ تحریری طورپربتائیں پارک کتنی جگہ پرمحیط ہے،حلف نامے کےساتھ تمام ریکارڈابھی لےکر آئیں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -