جوڈیشل مارشل لا ءکی بات وہی کرسکتا ہے جو لفظ مارشل لا ءسے پیار کرتا ہو:خورشید شاہ کا شیخ رشید کے بیان پر ردعمل

جوڈیشل مارشل لا ءکی بات وہی کرسکتا ہے جو لفظ مارشل لا ءسے پیار کرتا ہو:خورشید ...
جوڈیشل مارشل لا ءکی بات وہی کرسکتا ہے جو لفظ مارشل لا ءسے پیار کرتا ہو:خورشید شاہ کا شیخ رشید کے بیان پر ردعمل

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پاکستان پیپلز پارٹی کےسینئر رہنما سید  خورشید شاہ نے کہا ہے کہ جوڈیشل مارشل لا ءکی بات وہی کرسکتا ہے جو لفظ مارشل لا ءسے پیار کرتا ہو،ان کا کہناتھا کہ جو شخص مارشل دور کا حصہ رہا وہی بات کر سکتا ہے ،جوڈیشل مارشل لا غیر آئینی ہوگا

اسلام آباد میں عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئےسیدخورشید شاہ نے کہا کہ آئین میں سب واضح ہے اس سے آگے کوئی نہیں جا سکتا،کوئی آئین سے آگے گیاتو وہ آرٹیکل کے کسی زمرے میں آ سکتا ہے۔ان کا کہناتھا کہ کوئی جوڈیشل مارشل لا ءکا مشورہ مان لے تو بغاوت کے زمرے میں آ سکتا ہے ۔

اپوزیشن لیڈر کا کہناتھا کہ کوئی جمہوری آدمی جوڈیشل مارشل کی بات نہیں کر سکتا،مارشل لا کے حامی یا ان حکومتوں کا حصہ رہنے والے والے ایسی باتیں کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جس نے مارشل لاکا ساتھ دیاوہی ایسی باتیں کرتا ہے۔

خورشید شاہ نے کہا کہ نگران وزیراعظم کی تقرری پر نوازشریف سے بات کیوں کروں؟میری ن لیگ سے بھی بات کرنی نہیں بنتی ۔ان کا کہناتھا کہ میں اپنی پارٹی سے مشاورت ضرور کروں گا۔اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ اچھے اور بہتر آدمی کا نام کوئی بھی دے سکتا ہے ،نگراں وزیراعظم کے تقرر پر سیاسی جماعتوں سے مشاورت کروں گا۔

صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ نوازشریف کے مستقبل کے بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کروں گا،یہاں روز نئی چیز جنم ہے رہی ہے ، کل کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتا کوئی نجومی نہیں ہوں۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -