’راﺅانوارکی گرفتاری لیکن نقیب اللہ محسود کے اہلخانہ نے یقین دہانی کرادی ہے کہ ۔ ۔ ۔‘ انتہائی حیران کن خبرآگئی

’راﺅانوارکی گرفتاری لیکن نقیب اللہ محسود کے اہلخانہ نے یقین دہانی کرادی ہے ...
’راﺅانوارکی گرفتاری لیکن نقیب اللہ محسود کے اہلخانہ نے یقین دہانی کرادی ہے کہ ۔ ۔ ۔‘ انتہائی حیران کن خبرآگئی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے راﺅانوار کی حفاظتی ضمانت دینے اور جیل میں نہ رکھنے کی استدعا مسترد کردی جس کے بعد انہیں کراچی منتقل کردیاگیا اور تھوڑی دیر میں انسداددہشتگردی کی عدالت میں پیشی کا امکان ہے تاہم اب انکشاف ہوا کہ مقتول نقیب اللہ محسود کے اہلخانہ نے عدالت عظمیٰ میں یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ کوئی ایسا قدم نہیں اٹھائیں گے جس سے راﺅانوار کو نقصان پہنچے ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ’نقطہ نظر‘ میں گفتگو کرتے ہوئے عمران وسیم نے بتایاکہ راﺅانوار کے وکیل نے حفاظتی ضمانت اور جے آئی ٹی میں حساس اداروں کے نمائندگان کو بھی شامل کرنے کی استدعا کرنے کے ساتھ ساتھ اکاﺅنٹس بحالی ، جیل میں نہ رکھنے کی بھی درخواست کی ۔ عدالت نے وکیل سے استفسار کیا کہ حساس اداروں کا اس کیس کی تحقیقات سے کوئی تعلق نہیں ، راﺅانوار سندھ پولیس کیساتھ رہے اور یہی ان کا معاملہ دیکھیں گے ۔

راﺅانوار کے وکیل نے موقف اپنایا کہ ان کے موقف کو جیل میں نہ بھیجاجائے، جیل میں وہ لوگ بھی موجود ہیں جنہیں راﺅانوار نے جیل پہنچایا، لہٰذا جان کو خطرہ لاحق ہے جس پر عدالت کاکہناتھاکہ وہ جیل میں ہی رہیں گے تاہم سیکیورٹی یقینی بنانے کیلئے انتظامیہ کو حکم دیدیا۔دوران سماعت عدالت میں موجود نقیب اللہ کے اہلخانہ نے بھی یقین دہانی کرائی کہ وہ کوئی اس قسم کا اقدام نہیں کریں گے جس سے راﺅ انوار کو نقصان پہنچے ، نہ ہی نقیب اللہ کے چاہنے والے نقصان پہنچائیں گے ۔

سینئر تجزیہ نگار مجیب الرحمان شامی نے کہاکہ راﺅانوار جیل میں ہی رہیں گے لیکن ایک حصہ الگ کردیاجائے گا جہاں وہ دبدبے کیساتھ وقت گزاریں گے ۔

پروگرام کے میزبان اجمل جامی نے بتایاکہ راﺅانوار نے آج تک کسی انکوائری کا مقابلے کا سامنا نہیں کرناپڑا اورحیران کن طورپر 2011 سے 2018ءکے درمیان ہونیوالے تمام مقابلوں میں کسی ایک مقابلے میں بھی کوئی ایک پولیس اہلکار زخمی تک نہیں ہوا۔

مزید :

قومی -