’ ارے اس کا تو پہلے ہی شوہر ہے‘ سعودی شہری کی شادی، لیکن دلہن پہلے سے ہی کس کی بیوی تھی؟ شادی کے بعد ایسا انکشاف کہ شوہر کے پیروں تلے واقعی زمین نکل گئی

’ ارے اس کا تو پہلے ہی شوہر ہے‘ سعودی شہری کی شادی، لیکن دلہن پہلے سے ہی کس کی ...
’ ارے اس کا تو پہلے ہی شوہر ہے‘ سعودی شہری کی شادی، لیکن دلہن پہلے سے ہی کس کی بیوی تھی؟ شادی کے بعد ایسا انکشاف کہ شوہر کے پیروں تلے واقعی زمین نکل گئی

  

ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)مشرق وسطی کے ممالک میں مردوں کی ایک سے زیادہ شادیوں کا  رواج ہے مگر ایک سے زائد شادیوں والاایسا کیس کم ہی سننے میں آیا ہو گا جو خبروں کا عنوان بنا ہوا ہو  کہ ایک خاتون نے ایک ہی وقت میں دو مردوں سے شادی کی ہو۔حال ہی میں ایک سعودی شخص نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ اس کی مراکشی بیوی نے اسکے علاوہ ایک اور مرد سے شادی کی ہوئی ہے۔

یہ واقعہ نہ صرف انسان ہی کے لیے بلکہ سماجی میڈیا پر بھی تمام لوگوں کے لیے بہت بڑا جھٹکا تھا،بہت جلد ہی اس انوکھے واقعے کی دھو م پوری دنیا میں انٹر نیٹ کے ذریعے مچ گئی۔وہ شخص اس وقت سعودی عرب میں تھا جب اسے اپنی بیوی کی دوسری شادی کی اطلاعات موصول ہوئیں،اس نے فوراََاپنی بیوی کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا۔

سعودی شخص کو اپنی بیوی کی مبینہ دوسری شادی کا انکشاف اس وقت ہوا جب وہ وہ اپنے قانونی دستاویزات کو حل کرنے کے لئےگیا،عورت کی پہلی شادی کاسا بلانکا اور دوسری رباط میں رجسٹرڈ ہوئی تھی، اس انوکھے کیس نے لوگوں کے ذہن میں بہت سارے سوالات کو جنم دینے کے ساتھ ساتھ حیران کن کشمکش کا شکار بنا دیا ۔ سعودی شہری کی درخواست پر مراکش کی ایک عدالت اس مقدمے کی سماعت کررہی ہے ۔ 

سعودی درخواست گزار کا موقف ہے کہ حال ہی میں اسے پتہ چلا ہے کہ اس کی بیوی اس کے ساتھ نکاح میں آنے سے پہلے بھی کسی اور آدمی کے ساتھ نکاح میں تھی،پولیس کی تفتیش کے مطابق ان کا بھی یہی کہنا ہے کہ عورت نے ایک ہی وقت میں دو مردوں کے ساتھ شادی کی ہوئی ہے، اس عورت کی ایک شادی رباط کی فیملی کورٹ میں اور دوسری کاسا بلانکاکی ایک عدالت میں رجسٹرڈ ہے۔

اس کیس کے متعلق سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ پر مختلف لوگوں نے حیرت کا اظہار کیا ہے۔ سب لوگوں کے لیے یہ ایک لمحہ فکریہ ہے! یہ کیس عوام کے لیے بہت بڑا جھٹکا ہے جس کو سمجھنا آسان نہیں ہے: ”او میرے خدایا۔“ کچھ تو اپنی ہنسی کو ہی نہیں روک پا رہے: مشرقی ممالک میں یہ بات واضح ہے کہ عورت کا ایک ہی وقت میں ایک سے زیادہ شادیاں کرنا نہ صرف غیر قانونی ہے بلکہ یہ اسلامی قوانین کے ہی خلاف ہے۔

عورت کوتو قانونی پراسیکیوشن کا سامنا کرنا ہی پڑے گا لیکن اکثر لوگ ان سوچوں کو روکنے سے قاصر ہیں کے عدالت میں جب اس کی دوسری شادی ہو رہی تھی تو عدالت نے اس عورت کی شادی کے بارے میں حیثیت کی تصدیق کیوں نہیں کی؟

مزید :

عرب دنیا -