سہیل احمد ٹیپو کوقتل کیا گیا ،ماموں کی مدعیت میں مقدمہ درج

سہیل احمد ٹیپو کوقتل کیا گیا ،ماموں کی مدعیت میں مقدمہ درج
سہیل احمد ٹیپو کوقتل کیا گیا ،ماموں کی مدعیت میں مقدمہ درج

  

گوجرانوالہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)گوجرانوالہ کے ڈی سی سہیل احمد ٹیپوکے کیس میں نیا موڑ جہاں ان کے ماموں کا کہنا ہے کہ ان کے بھانجے کو نامعلوم افراد نے نامعلوم وجوہات کی بناپر قتل کیاجبکہ  اس کیس کا مقدمہ سہیل ٹیپو کے ماموں کی مدعیت تھانہ سول لائنز میں درج کیا گیاہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سہیل ٹیپو کے ماموں اکرم طاہرانصاری کا کہنا ہے کہ میرے بھانجے کونامعلوم افراد نے قتل کیاان کے ہاتھ باندھے گئے تھے جبکہ گردن میں تار اورکپڑ الپٹا ہوا تھا جس سے اس بات کوتقویت ملتی ہے کہ سہیل نے خود کشی نہیں کی بلکہ اس کا قتل کیا گیا ہے۔

خیال رہے اس سے قبل کمشنر گوجرانوالہ نے تصدیق کرتے ہوئے کہاتھا کہ ڈپٹی کمشنر سہیل احمد ٹیپو نے گلے میں پھندا ڈال کر خودکشی کی ہے۔ رپورٹس کے مطابق ڈپٹی کمشنر نے پنکھے سے لٹک کر خودکشی کی جب کہ پولیس نے دروازہ توڑ کر لاش نکالی تو ڈپٹی کمشنر کے دونوں ہاتھ بندھے ہوئے تھے۔

دوسری جانب ڈپٹی کمشنر گوجرانوالہ کے ملازمین کا کہنا ہے کہ وہ کافی دن سے پریشان تھے اور آفس بھی کم آتے تھے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -گوجرانوالہ -