’اس لڑکی کو ریپ کرنے کے بعد ہم نے کھانا بنایا اور اس کی۔۔۔‘ نوجوان جوڑے کی خاتون کے ساتھ جنسی زیادتی اور پھر لاش کے ساتھ ایسا کام کردیا کہ آپ بھی کانپ اُٹھیں

’اس لڑکی کو ریپ کرنے کے بعد ہم نے کھانا بنایا اور اس کی۔۔۔‘ نوجوان جوڑے کی ...
’اس لڑکی کو ریپ کرنے کے بعد ہم نے کھانا بنایا اور اس کی۔۔۔‘ نوجوان جوڑے کی خاتون کے ساتھ جنسی زیادتی اور پھر لاش کے ساتھ ایسا کام کردیا کہ آپ بھی کانپ اُٹھیں

  

نیوکاسل(نیوز ڈیسک)انسان جہاں ایک جانب محبت اور احساس کا دوسرا نام ہے تو وہیں ایک تلخ سچ یہ بھی ہے کہ اسے درندہ بنتے بھی دیر نہیں لگتی۔ برطانیہ میں ایک نوجوان دوشیزہ کی عصمت دری، پھر قتل اور اس کے بعد لاش پر بیٹھ کر اپنی پسندیدہ ڈش سے لطف اندوز ہونے والاسفاک جوڑا بھی ایک ایسی ہی مثال ہے۔

ڈیلی سٹار کے مطابق ولیم جان میکسفام اور سٹیفن ان ون نامی سفاک جوڑے نے کیان نگوئن نامی نوجوان خاتون کی عصمت دری کے بعد انتہائی بے رحمی سے اسے قتل کر ڈالا اور بعد ازاں اس کی لاش ایک گاڑی میں رکھ کر گاڑی کو آگ لگا دی۔ دونوں قاتل اب اس بھیانک جرم کا الزام ایک دوسرے پر ڈال رہے ہیں۔

نیو کاسل کراﺅن کورٹ کو بتایا گیا کہ پتھر دل قاتلوں نے خاتون کو قتل کرنے کے بعد اپنی پسندیدہ سپائسی ڈش تیار کی اورپھر لاش پر بیٹھ کراسے کھاتے رہے۔ ویت نام سے تعلق رکھنے والی مقتولہ دوشیزہ مس نگوئن ان کے ہاتھ کیسے لگی، یہ واضح نہیں البتہ تحقیقات کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسے قتل کرنے سے پہلے نشہ آور ادویات کھلائی گئی تھیں۔ سنڈرلینڈ کے علاقے میں اس کی جھلسی ہوئی لاش ایک کار میں سے ملی تھی۔ شواہد سے یہ بھی ظاہر ہوتاہے کہ اسے قتل کرنے سے پہلے باقاعدہ منصوبہ بندی کی گئی تھی اور قتل کے بعد بھی دونوں قاتل آپس میں رابطے میں رہے اور اس لرزہ خیز جرم کے بارے میں ایک دوسرے کے ساتھ بات بھی کرتے رہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -