1947ء کی جنگ کشمیر میں محسود قبائل کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑ ی ہے: شاہین محسود کور کمانڈر

1947ء کی جنگ کشمیر میں محسود قبائل کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑ ی ہے: شاہین ...

ٹانک (نمائندہ خصوصی)محسود قبائل کی تاریخ قربانیوں سے بھری پڑی ہے 1947کی جنگ کشمیر ،1965اور 1971کے معرکوں میں شجاعت کے ایسے کارنامے سرانجام دئیے ہیں جن کی مثال نہیں ملتی ہے موجودہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں محسود قبائل نے اپنا علاقہ گھر بار چھوڑ کر اپنے ہی ملک میں آئی ڈی پیز کی زندگی بسر کرنے کبھی گلہ شکوہ نہیں کیا قبائلی علاقے کو گزشتہ 70سالوں سے مسلسل نظر انداز رکھ کر یہاں کے قبائلیوں کے ساتھ ناانصافی کی گئی فاٹا کو خیبر پختون خواہ میں ضم ہونے کے بعد یہاں کی محرمیوں کا ازالہ کیا جائیگا ان خیالات کا اظہار 11کور کے کمانڈر لیفییٹنٹ جنرل مظہر شاہین محمود نے جمعرات کے روز محسود قبائل کے بلائے گئے گرینڈ جرگہ سے جرگہ ہال جنوبی وزیرستان میں کیا اس موقع پر آئی جی ایف سی ساؤتھ میجر جنرل عابد لطیف ،سیکٹر کمانڈر ساؤتھ بریگیڈئیر امتیاز حسین ،55بریگیڈ کمانڈر بریگیڈ ئیر واجد صبغت اللہ ،کمانڈر بی ٹی ایف بریگیڈئیر رائے عاصم ،کمشنر ڈیرہ جاوید مروت اور ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان نعمان افضل آفریدی بھی موجود تھے قبائلی رہنماء ملک معسود احمد نے محسود قبائل کو درپیش مشکلات پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ جنگ آزادی کشمیر سے لیکر موجودہ دہشت گردی کے خلاف لڑی جانیوالی جنگ میں محسود قبائل نے جو قربانیاں دی ہیں اس پر ہمیں فخر ہے اور آئندہ کے لئے بھی ضرورت پڑنے پر کسی بھی قسم کی قربانی دینے سے دریغ نہیں کیا جائیگا انہوں نے علاقہ علاقے میں ہسپتال ،معیاری سکول ،آبنوشی ،موبائل سروس کی فوری طور پر منظوری سمیت لیوی اور خاصہ دار فورس کو برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا کور کمانڈر نے جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کسی خاصہ دار اور لیوی فورس کے اہلکاروں کو بے روزگار نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ ان کو پولیس میں ضم کیا جائیگا اور جنوبی وزیرستان میں باہر سے کسی اور ضلع سے تعلق رکھنے والوں کو تھانیدار لیول تک بھرتی نہیں کیا جائیگا بلکہ یہاں کے مقامی تعلیم یافتہ جوانوں کو بھرتی کیا جائیگا موبائل سروس کا ذکر کرتے ہوئے کور کمانڈر کا کہنا تھا کہ عنقریب موبائل سروس شروع کی جا رہی ہے جس کے لئے موبائل ٹاور ز پر کام جاری ہے انہوں نے کہا کہ ضلعی ہیڈ کوارٹر کی جنوبی وزیرستان میں بنانے کے لئے جب تک محسود اور وزیر مشران آپس میں متفق نہ ہو جائے تب تک ضلعی ہیڈ کوارٹر بدسوتور یہاں پر قائم رہیگا

مزید : پشاورصفحہ آخر