ڈیم فند ، ثاقب نثار نے کینیڈا میں4لاکھ26ہزار6سو ڈالر جمع کئے

ڈیم فند ، ثاقب نثار نے کینیڈا میں4لاکھ26ہزار6سو ڈالر جمع کئے

کینیڈا (آ ئی این پی)سابق چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس (ر)میاں ثاقب نثار نے اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان آبی قلت کا شکار ملک ہے لیکن حکومتوں نے اس ضمن میں اقدامات کرنا تو دور کی بات عوام الناس میں آگاہی بھی نہیں پھیلائی،انہوں نے یہ بات اوٹاوہ کی بلال مسجد میں موجود پاکستانیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی، اس موقع پرسمندر پار پاکستانیوں نے میاں ثاقب نثار کو عطیات کے چیک پیش کیے،سابق چیف جسٹس آف پاکستان کے پاس کچھ دیر میں ڈیم فنڈز کی مد میں چار لاکھ 26 ہزار 600 کینیڈین ڈالرز کے عطیات جمع ہوگئے جس پر انہوں نے سمندر پار پاکستانیوں کا شکریہ بھی ادا کیا۔ انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان میں ہمیں بغیر بھیک کے ڈیم بنانا ہے، انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کا خلوص اوران کی محبت ناقابل بیان ہے، ان کا کہنا تھا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی ملک کے لیے قربانیاں دیتے ہیں حالانکہ کئی لوگ عشروں تک پاکستان نہیں جاتے ہیں،پاکستان میں پانی کی صورتحال کا ذکر کرتے ہوئے سابق چیف جسٹس نے کہا کہ آنے والے سالوں میں شاید پینے تک کا پانی دستیاب نہ ہو، انہوں نے خبردار کیا کہ اس کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر نقل مکانی ہو گی،جسٹس (ر)ثاقب نثار نے کہا کہ حکومتوں کی بے عملی کی وجہ سے سپریم کورٹ آف پاکستان کو اس معاملے میں مداخلت کرنا پڑی،انہوں نے پانی کو زندگی کے بنیادی حقوق میں شامل قرار دیتے ہوئے کہا کہ تحقیق کے مطابق پاکستان کو ہر دس سال بعد ڈیم بنانے کی ضرورت ہے لیکن ملک میں ماحولیات کے شعبے کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر