امریکہ میں سرکاری بسوں پر اسلام مخالف اشتہاری مہم شروع

امریکہ میں سرکاری بسوں پر اسلام مخالف اشتہاری مہم شروع
امریکہ میں سرکاری بسوں پر اسلام مخالف اشتہاری مہم شروع

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ کی سر کاری بسوں پر اسلام مخالف مہم شروع کردی گئی۔ بسوں پر مفتی دیار القدس الحاج امین الحسینی اور ہٹلر کی 73 سال پہلے ہونے والی ملاقات کی قد آدم تصاویر لگائی گئی ہیں اور ان پر لکھا ہے کہ امریکا، سلامی ملکوں کی امداد بند کردے کیونکہ دین اسلام یہودیوں سے نفرت پر اکساتا ہے۔ ’’آزادی کے تحفظ کا امریکی اقدام‘‘ نامی تنظیم کے زیراہتمام منافرت پر مبنی حالیہ مہم کی منتظم امریکی مصنفہ پامیلا گیلر ہیں۔ پامیلانے تین برس قبل ’’امریکا کی اسلامائزیشن بند کرو‘‘ کے عنوان سے کتاب بھی لکھی تھی۔ ’’آزادی کے تحفظ کا امریکی اقدام‘‘ نامی تنظیم کی بنیاد خود پامیلا گیلر اور سستی شہرت کی طلبگار اس جیسی چند دوسری امریکی شخصیات نے کی تھی۔ پامیلا گیلری کی زیر نگرانی چلنے والی اسلام مخالف مہم میں شہر کے اندر چلنے والے بسوں پر نازی رہنما ہٹلر کی قد آدم تصویر لگئی گئی ہیں جس میں وہ مفتی القدس الحاج امین الحسینی کے ہمراہ بیٹھے دیکھے جاسکتے ہیں۔ یاد رہے امین الحسینی نے 1941ء میں برلن کا دورہ کیا تھا۔ مفتی دیار القدس نے ملاقات میں نازی رہنما ہٹلر کو ان خظرات سے آگاہ کیا تھا جوبرطانوی ایما پر یہودیوں کی فلسطین ’’ہجرت‘‘ سے پیدا ہوسکتے تھے اور اس ساری صورتحال میں ہٹلر کی خاموشی پر بھی اعتراض کیا تھا۔ مفتی فلسطین نے ہٹلر سے مطالبہ کیا تھا کہ اہم ممالک فلسطینیوں کی خواہشات کا احترام کریں اور انہیں آزادی دلانے کا اپنا وعدہ پورا کریں۔

مزید : بین الاقوامی