وزارت دفاع کی بس پر حملہ، مجرم کی سزاکے خلاف فریقین کے وکلا طلب

وزارت دفاع کی بس پر حملہ، مجرم کی سزاکے خلاف فریقین کے وکلا طلب

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے راولپنڈی میں وزارت دفاع کی بس پر حملہ کیس میں 20مرتبہ سزائے موت پانے والے مجرم عمر عدیل کی سزاکے خلاف اپیل پر فریقین کے وکلاءکو بحث کے لئے طلب کر لیا۔لاہور ہائیکورٹ کے شاہد حمید ڈار اور سردار شمیم پر مشتمل ڈویژن بینچ نے کیس کی سماعت کی ،مجرم عمر عدیل کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ انسدا ددہشت گردی راولپنڈی کی عدالت نے بس حملہ کیس میں بغیر کسی ثبوت اور گواہ کے اسے بیس مرتبہ سزائے موت سنا دی۔انہوں نے کہ عدالت نے قوانین کے برعکس یکطرفہ کارروائی کرتے ہوئے فیصلہ سنایا لہذا ٹرائل کورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔ سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ملزم نے راولپنڈی کے آرے بازاد میں خود کش حملہ آور شکیل پٹھان کو گاڑی میں وزارت دفاع کی بس کے قریب اتارا اور اس حملہ میں مکمل معاونت فراہم کی۔اس دہشت گردانہ کاروائی کے نتیجے میں وزارت دفاع کے بیس افسران شہید اور چھتیس زخمی ہوئے۔ ملزم کسی رعائیت کا مستحق نہیں ہے۔سرکاری وکیل کی جانب سے مزید دلائل دینے کے لیے وقت مانگنے پر عدالت نے کیس کی سماعت چوبیس جون تک ملتوی کرتے ہوئے فریقین کے وکلاءکو مزید دلائل کے لئے طلب کر لیا۔

مزید : علاقائی