نواز شریف کی نریندر مودی کی تقریب حلف برادری میں شمولیت رسمی ہو گی سیاستدان

نواز شریف کی نریندر مودی کی تقریب حلف برادری میں شمولیت رسمی ہو گی سیاستدان

                         لاہور( انوسٹی گیشن سیل)نواز شریف کی نریندر مودی کی حلف برادری کی تقریب میں شمولیت رسمی ہو گی جس سے تعلقات پر فرق نہیں پڑے گا۔تعلقات کی بہتری کےلئے نیک نیتی سے ملاقاتیں کرنی ہوگی ۔ان خیالات کا اظہار ملک کے سیاسی رہنماو¿ں نے رو ز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔وفاقی پارلیمانی سیکرٹری رانا افضل خان نے کہا کہ ساٹھ ممالک کے رہنماو¿ں کو دعوت دی گئی ہے نواز شریف کو بھی حلف برداری کی تقریب میں شمولیت اختیار کرنی چاہیے ورنہ دنیا کو تاثر جائے گا کہ پاکستان ا ور بھارت کے تعلقات معمول پر نہیں آ سکتے۔جماعت اسلامی کے رہنما فرید پراچہ نے کہا کہ نواز شریف کا بھارت جانا رسمی ہو گا تعلقات پر اثر نہیں پڑے گا۔لیکن نریندر مودی کے بیانا ت پاکستان کےلئے مثبت نہیںاسلئے نواز شریف کو سوچ سمجھ کر چلنا ہوگا ورنہ پاکستان کے مسائل کی اہمیت ختم ہو جائے گی۔سابق گورنر پنجاب لطیف کھوسہ نے کہا کہ بھارت کے ساتھ تعلقات کو اچھا بنانا یا بگاڑنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے۔نریندر مودی نے الیکشن کے دوران سب واضح کر دیا کہ وہ پاکستان کےلئے کیا سوچ رکھتے ہیں نواز شریف کا بھارت جانا بے مقصد ہو گا۔تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی رائے حسن نواز نے کہاکہ جب بھارتی وزیر اعظم نواز شریف کی حلف برداری کی تقریب میں شامل نہیں ہوئے تھے تو نواز شریف کو بھی سو چ سمجھ کر فیصلہ کرنا چاہیے۔ تمام فیصلے ملکی مفاد کےلئے ہونے چاہیں لیکن حلف برادری کی تقریب میں شمولیت مستقبل میں تعلقات کو معمول پر لانے میں کردار ادا کر سکتی ہے۔مسلم لیگ (ق)کے رہنما عامر سلطان چیمہ نے کہا کہ بھارت پاکستان کا دوست نہیں ہو سکتا اور تعلقات میں نشیب و فراز تاریخ کا حصہ بن چکے ہےں۔ رسمی ملاقاتوں سے دونوں ممالک کے درمیان خوشگوار تعلقات پیدا نہیں ہو سکتے۔

مزید : علاقائی