سویڈش کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری کی خواہشمند ہیں ،سپیکر پارلیمنٹ

سویڈش کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری کی خواہشمند ہیں ،سپیکر پارلیمنٹ

                                                                             لاہور(کامرس رپورٹر)سویڈن پاکستان کے ساتھ تجارت،سرمایہ کاری ،تعلیم،صحت،سیاحت اور ٹیکنیکل ایجوکیشن سمیت دیگر شعبوں میں باہمی تعاون بڑھانا چاہتا ہے کیونکہ مستقبل میں پاکستان کے ترقی کرنے کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ان خیالات کا اظہار سویڈن پارلیمنٹ کے وفدکی قیادت کرتے ہوئے سپیکر پر ویسٹ برگ نے ایک اعلیٰ سطحیٰ وفد کے ہمراہ لاہور چیمبر میں منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سویڈن کے سفیرٹامس روسانڈر ،لاہور چیمبر کے صدر سہیل لاشاری اور نائب صدر کاشف انور نے بھی خطاب کیا۔ویسٹ برگ نے کہا کہ پہلی مرتبہ سویڈن کی پارلیمنٹ کے وفد کے ہمراہ ایک تجارتی وفد بھی پاکستان آیا ہے جس کا مقصد پاکستان کے ساتھ دو طرفہ تجارتی تعلقات کو فروغ دینا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ایک مضبوط جمہوری حکومت ہے اور وہ درست سمت گامزن ہے اس لئے سویڈن کی سرمایہ کار کمپنیاں پاکستان میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کرنے کی خواہش مند ہیں ۔انہوں نے کہا کہ سویڈن یورپ کا ایک ترقی یافتہ ملک ہے جہاں زیادہ تر ملٹی نیشنل کمپنیاں کام کر رہی ہیں اور حکومت نے انہیںہر قسم کی سہولت دے رکھی ہے۔انہوں نے بتایا کہ سویڈن میں 60فیصد بجلی ہائیڈرو ذرائع سے حاصل کی جا رہی ہے۔پاکستان میں بجلی کے

بحران کو دور کرنے میں سویڈن پاکستان کو اس شعبے میں تعاون فراہم کرنے کیلئے تیار ہے۔انہوں نے پاکستان اور سویڈن کے درمیان پارلیمینٹرین اور تجارتی سطح پر وفود کے تبادلوںپر زور دیا اور کہا کہ وفود کے تبادلوں سے دونوں ملکوں کے دو طرفہ تجارتی تعلقات کو فروغ ملے گا۔انہوں نے بتایا کہ سویڈن کی زیادہ تر تجارت یورپی ممالک کے ساتھ ہو رہی ہے ، پاکستان کو بھی علاقائی تجارت پر توجہ دینی چاہیے۔پاکستان میں متعین سویڈن کے سفیر ٹامس روسانڈرنے کہا کہ سویڈن کے تعاون سے سیالکوٹ میں یونیورسٹی کے قیام پر بات چیت جاری ہے ۔

،سویڈن کی پارلیمنٹ کے سپیکر کی قیادت میں اراکین پارلیمنٹ اورتجارتی وفد کے دورہ پاکستان کا مقصد یہاں مختلف شعبوں میں باہمی تعاون بڑھانا اور سرمایہ کاری کا جائزہ لینا ہے ۔سویڈن پاکستان میں ٹیکنیکل ایجوکیشن کیلئے تعاون فراہم کرنے کیلئے تیار ہے ۔قبل ازیں لاہور چیمبر کے صدر سہیل لاشاری نے خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے جی ایس پی پلس سٹیٹس حاصل کرنے کے لیے پاکستان کی مدد کرنے پر سویڈن کی حکومت کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ یہ سٹیٹس حاصل ہونے کے بعد پاکستان کی یورپین یونین کو برآمدات بڑھیں گی اور معیشت کو استحکام حاصل ہوگا۔ پاکستان اور سویڈن کو تجارت، سرمایہ کاری ،تعلیم ،ہیلتھ کیئر، لائف سائنسز، توانائی ، ماحولیات، انفارمیشن، کمیونیکیشن ٹیکنالوجی، بزنس انفراسٹرکچر اور سروسز سمیت تمام شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینا چاہیے۔ انہوں نے سویڈن کی حکومت سے درخواست کی کہ وہ پاکستانی طلباءکے لیے سکالرشپ کے کوٹہ میں اضافہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور سویڈن کو ایک دوسرے کے لیے ٹورازم پیکیج دینے چاہئیں جس سے دونوں ممالک کو فائدہ ہوگا۔

مزید : کامرس