سیاسی اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا

سیاسی اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا
 سیاسی اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا

  


السلام علیکم پیارے دوستو! سنائیں کیسے ہیں ،امید ہے کہ اچھے ہی ہوں گے ہم بھی اچھے ہیں ۔دوستو! آج کل ملک میں ہر طرف سیاسی گہما گہمی ہے۔ ہر طرف سیاسی جماعتوں کے قائدین مختلف شہروں میں جلسے کرتے نظر آتے ہیں ،کبھی کپتان شیر کو للکارتا ہے تو کبھی شیردھاڑیں مار مار کر اپنی طاقت کے احساس سے دنیا بھر کے عوام کو آگاہ کرتا ہے ، بہر حال موسم سیاست کا آغاز ہے، کیونکہ حکومت کو چار سال کا عرصہ گز ر چکا ہے۔ حکومت کی کارکردگی گزشتہ چار سالوں میں تسلی بخش ہی رہی۔ موجودہ حکومت نے، جو کہ میاں نواز شریف کی ہے ملک بھر میں تعمیر و ترقی کے بے شمار منصوبہ جات شروع کئے ۔ پہلے موٹر وے کا آغاز میاں نواز شریف حکومت نے کیا اور اب میٹرو اورنج ٹرین کے افتتاح کا سہرا بھی اسی حکومت کے سر ٹھہرا۔ دوستو! میاں نواز شریف حکومت کے بڑے کارناموں میں سے ایک کارنامہ ایٹمی دھماکے کرنا بھی ہے ۔ ایٹمی دھماکے کر کے پاکستان کو دنیا بھر میں ناقابل تسخیر بنانے والا بھی میاں نواز شریف ہی ہے ، میاں نواز شریف جب بھی برسر اقتدار آئے، ملک ہمیشہ ترقی کی راہوں پر گامزن ہوا ۔

یہ میاں نواز شریف کی حکومت ہی ہے جس نے ایک بارپھر ملک بھر کے عوام کو مہنگائی کے جن سے نجات دلوائی اور نہ صرف یہ بلکہ ملک بھر میں پٹرول کی قیمتیں جو آسمان کوچھو رہی تھیں کم کیں۔ موجود دورمیں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ میں بھی نمایاں کمی ہوئی، تاہم یہ بات بھی سب جانتے ہیں کہ عمران خان گزشتہ چار سالوں سے حکومت کے خلاف مہم جاری رکھے ہوئے ہیں اور مسلسل حکومت کی راہ مین مشکلات کھڑی کر رہے ہیں، کبھی دھرنوں کی صورت میں تو کبھی جلسوں کی شکل میں کڑوے کسیلے بیانات بھی حکومت کے خلاف دیتے نظر آتے ہیں۔

تاہم تمام تر مخالفتوں کے باوجود ملک مسلسل ترقی کی منازل طے کرتا جا رہا ہے حکومت تمام تر مخالفتوں کے باوجود شب و روز ملک کی ترقی میں مصروف عمل ہے ، بات ہو رہی تھی حکومت کے گزشتہ چار سالوں کی تو یقیناًحکومت نے گزشتہ چار سالوں میں ملک بھر میں تیز تر ترقیاتی کام کروا کے عوام کے دل جیت لئے ہیں،اسی لئے تمام قائدین مسلم لیگ (ن) کو یقین ہے کہ اپنی بہترین کارکردگی کے بل بوتے پر آئندہ انتخابات بھی مسلم لیگ (ن) ہی جیتے گی تاہم گرما گرم خبر تھی کہ مریم نوا زبھی لاہور سے انتخابات میں حصہ لینے کی تیاری کر رہی ہیں بعض حلقوں کا کہنا ہے کہ مریم نواز آئندہ حکومت میں بھی نمایاں و اہم کردار ادا کریں گی بہر حال اب ایک بارپھر موسم سیاست میں طوفان سا بپا نظر آتا ہے اور اس تیز و تند آندھی و طوفان کے کیا اثرات مرتب ہوں گے، یہ بات بھی وقت بتائے گا۔ بہرحال تمام جماعتوں نے آئندہ انتخابات کی تیاری کا آغاز کر دیا ہے۔

اب دیکھنا تو یہ بھی ہے کہ حکومت کی مدت تو تقریباً پوری ہونے کے قریب ہے، لیکن بہت سے سوالات بھی پیدا ہو رہے ہیں کہ آئندہ سیاسی منظر کیا ہو گا اور کس کے مقدر میں ہار ہو گی اور کون میدان سیاست کا سکندر ہو گا؟ اور آئندہ سیاسی اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا،یہ بات بھی وقت ہی بتا سکتا ہے۔ فی الوقت اجازت چاہتے ہیں، جلد بریک کے بعد ملاقات ہوگی تو چلتے چلتے اللہ نگہبان اور رب راکھا۔

مزید : کالم