چین میں چینی کی درآمد پر ٹیکسوں کے نفاذ اور سمگلنگ روکنے سے صنعتی استحکام کی توقع

چین میں چینی کی درآمد پر ٹیکسوں کے نفاذ اور سمگلنگ روکنے سے صنعتی استحکام کی ...

بیجنگ (اے پی پی) چینی ماہرین نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے چینی کی درآمد پر ٹیکسوں کے نفاذ اور قدیم راستوں کے ذریعے اس کی سمگلنگ کی روک تھام کے اقدامات سے ملکی صنعت کے استحکام کی توقع ہے۔ذرائع ابلاغ کے مطابق چین کی وزارت تجارت رواں ہفتے چینی کی درآمد اور سمگلنگ کی روک تھام کیلئے تحقیقات کے آغاز اور دیگر اقدامات کا اعلان کرے گی۔انھوں نے بتایا کہ ہر سال دوملین ٹن سے زیادہ خام اور سفید چینی تھائی لینڈ اور دیگر پیداواری ملکوں سے درآمد کی جاتی ہے جس کی موجودہ قدر 2 ارب ڈالر سے زیادہ ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ بیرون ملک سے سستی چینی کی درآمد سے ملکی صنعت دباؤ کا شکار ہے۔چینی کی درآمد صنعتی پیداوار میں کمی کے ساتھ ساتھ روزگار کے مواقع کم کرنے کا بھی سبب بنی۔انھوں نے بتایا کہ چین سالانہ 3 ملین ٹن چینی درآمد کرتا ہے جس میں سے 1.94 ملین ٹن پر 15 فیصد ڈیوٹی عائد کی جاتی ہے۔حکومت کوٹے سے ہٹ کر بھی 1.9 ملین ٹن چینی کی درآمد کی اجازت دیتی ہے جس پر 50 فیصد ڈیوٹی وصل کی جاتی ہے۔

مزید : کامرس