مشال خان کا چہلم ، سیاسی و سماجی شخصیات نے قبر پر پھول چڑھائے ، فاتحہ خانی کی

مشال خان کا چہلم ، سیاسی و سماجی شخصیات نے قبر پر پھول چڑھائے ، فاتحہ خانی کی

صوابی (آن لائن) صوابی میں طالبعلم مشال خان کا چہلم آہوں اور سسکیوں میں گزر گیا جبکہ مقتول کے والد اور بہن نے حکومت سے دھائی کی ہے کہ مشال کے قتل کے ہدایتکاروں کو گرفتار کر کے ہمیں انصاف فراہم کیا جائے ۔ تفصیلات کے مطابق اتوار کے روز مردان میں عبدالولی خان یونیورسٹی میں قتل ہونیوالے مشال خان کا چہلم منایا گیا جس میں سیاسی اور علاقائی شخصیات نے شرکت کر کے مقتول کے ایصال ثواب اور مغفرت کیلئے دعا کی، قبر پر فاتحہ خوانی اور پھولوں کی چادر چڑھائی ۔ اس موقع پر مشال خان کے والد اقبال خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے مشال کے قتل کو چالیس دن ہو گئے مگر اس کے قاتل اب بھی آزاد ہیں، حکومت سے اپیل ہے کہ مشال کے قتل کے ہدایتکاروں کو گرفتار کیا جائے کیونکہ ابھی تک اداکاروں کو گرفتار کیا گیا ، مشال کے قاتلوں کو سزا دی جائے تاکہ کسی اور مشال کا قتل نہ ہو جبکہ اس موقع پر مشال خان کی بہن نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ہمیں سکیورٹی فراہم کی جائے کیونکہ میں اعلی تعلیم حاصل کرنا چاہتی ہوں مگر اسوقت تک یونیورسٹی نہیں جاؤں گی جب تک ہمیں مکمل سکیورٹی فراہم نہیں کی جاتی ۔ حکومت نوجوانوں کی حفاظت کیلئے اعلی اقدامات کریں اور طلباء کو سکیورٹی فراہم کریں،ایک مشال تو بجھ گیا مگر ہم اور کسی مشال کو بجھنے نہیں دیں گے جب تک ہمیں مکمل سکیورٹی فراہم نہیں کی جاتی ہم سکول اور یونیورسٹی نہیں جائیں گے ۔

مشال چہلم

مزید : صفحہ اول