ادویات کی قیمتوں میں اضافہ‘ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے وزارت صحت کو خط لکھ دیا

ادویات کی قیمتوں میں اضافہ‘ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے وزارت صحت کو خط لکھ دیا

  

لاہور(پ ر)ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل پاکستان کی جانب سے وزارت صحت کو لکھا گیا خط ۔خط کے متن میں ٹرانسپرنسی انٹرنیشل نے DRAPکیجانب سے ادویات کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے اور اس کے جواب سے غیر مطمئن ہونے پر شکایت کیٹرانسپرنسی انٹرنیشل پاکستان کی جانب سے سیکرٹری کے نو ٹس میں لایا گیا ہے کہ 24اپریل کو لکھے گئے خط کے جواب میں DRAPکی وضاحت غیر تسلی بخش ہے گزشتہ لکھے گئے خط میں مندرجہ ذیل سوالات اٹھائے گئے تھے۔1۔بارہ مہینے کے عرصے میں ادویات کی قیمتوں میں 3بار اضافے کی وجہ کیا ہے؟2۔جب قیمتو ں کا تعین 2015میں ہو چکاتھا تو تین سال کی مختصر مدت کے دوران قیمتوں میں تبدیلی کی کیا وجوہات ہیں؟3۔سپریم کورٹ نے DRAPکو قیمتوں کے تعین کی نئی پالیسی 2013بنانے کا حکم نہیں دیاتھا۔جس میں سپریم کو رٹ نے DRAPکو مندرجہ ذیل سفارشات کی تھیں۔ان سفارشات میںDRAPکو مسئلے کے حل کےلئے کہا گیا اور ایک مہینے کے بعد کیس عدالت میں سماعت کےلئے مقرر کیا گیا-

 لیکن DRAPنے قیمتوں کی نئی پالیسی بنائی جو کہ 6جون 2018کو لاگو کی گئی جو عدالت کے احکامات کے چھ مہینے بعدعدالت میں جمع کرائی گئی یہ سراسر عدالت کے احکامات کی خلاف ورزی تھی ۔سپریم کورٹ نے ادویات ساز کمپنیوں کو ڈبوں اور ریپرز پر بار کوڈ لگانے کے احکامات جاری کےے تھے ۔کیا DRAPنے اس بات کو یقینی بنایا کہ 2018تک ادویات ساز کمپنیاں ان احکامات پر عمل پیرا ہو چکی ہیں ۔12جون2018کو ادویات کی قیمتوں کا تعین کر نے کا فارمولاتبدیل کر دیا گیا۔ جس کی وجہ سے ادویات کی قیمتوں میں 240%سے 355%تک اضافہ ریکارڈ کیاگیاڈالر کی قیمت اور مہنگائی میں اضافہ پہلے سے ہی ادویات سازی کی قیمت میں شامل ہے ۔ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے سیکر ٹری سے ان معاملات کا بغور جائزہ لینے اور عمل درآمد کرانے کی در خواست کی

مزید :

کامرس -