ملک اور قوم کو ورلڈ بینک،آئی ایم ایف کی غلامی میں دیا جا رہا ہے:سراج الحق

ملک اور قوم کو ورلڈ بینک،آئی ایم ایف کی غلامی میں دیا جا رہا ہے:سراج الحق

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک اور قوم کو ورلڈ بینک،آئی ایم ایف کی غلامی کی طرف دھکیلا جارہا ہے،پاکستان ایک نظریہ ہے ٗہمیں دلیل اورمحبت کے ساتھ تحریک کی دعوت اور حق و سچ کا پیغام پہنچانا ہے۔ اردو واحد زبان ہے جس نے قوم کو یکجا کیا ہوا ہے، جماعت اسلامی ایک وژن کا نام ہے آنے والا کل اسلامی انقلاب اوراسلامی نظام کا ہوگا، جماعت اسلامی کی تحریک حق کا تسلسل ہے، صرف حصول اقتدار اور حصول حکومت ہمارا مقصد نہیں بلکہ رضائے الہی کا حصول ہی ہماری آخری منزل ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ادارہ نورحق میں نظمِ حلقہ ٗ نظمِ ضلع ٗ ناظمین علاقہ جات و نائبین ٗبرادر تنطیمات ٗشعبہ جات کے ذمہ داران کی شب بیداری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شب بیداری سے نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم،امیر جماعت اسلامی صوبہ بلوچستان مولانا عبد الحق ہاشمی نے روزہ اور اس کے احکام اور فلسفہ، امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے بھی خطاب کیا۔ سینیٹر سراج الحق نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ  ہمیں نظام مصطفی ؐ اور خلافت راشدہ کا نظام قائم کرنا ہے۔ اللہ تعالیٰ نے مومنین سے جنت کے بدلے ان کی جان و مال کا سودا کیا ہے۔ اللہ کے نظام میں کسی کو شریک نہیں کرسکتے۔ ہمارے مسائل کا حل اللہ کی بندگی اور نبی اکرم ؐ کی اطاعت میں ہے۔مثالی زندگی،نبی مہربان ؐکی زندگی ہے،جماعت اسلامی صرف ووٹ نہیں مانگتی ہے،عقیدہ،اخلاق،معاملات،معیشت اور معاشرت کو بہتر کرنے کی جدوجہد کررہی ہے،ہم نبی اکرم ؐ سے عشق ومحبت کے بغیر کوئی کام نہیں کرسکتے،معاشرے نے اجتماعی معاملات میں نبی مہربانؐ کی سنتوں کو چھوڑ رکھا ہے،درود وسلام کی صورت میں بھی نبی ؐسے محبت کا اظہار ہونا چاہیے اور اپنے بچوں کو بھی تلقین کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ اسلامی تحریکوں پر حملے ہورہے ہیں،ناٹو امت مسلمہ کے خلاف صف آرا ء ہے، ان حالات میں امت کو متحد ہونے کی ضرور ت ہے۔ راشد نسیم نے کہاکہ  شب بیداری تربیت کی ایک شکل ہے، ہم فلاح اخروی اورایمان واحتساب کے لئے جمع ہوئے ہیں، اقامت دین کے لئے ہماری جدوجہد جاری ہے۔مولانا عبد الحق ہاشمی نے کہاکہ استقبال رمضان اور اہتمام رمضان کیا جانا چاہیے،صائم رک جانے والے انسان کو کہتے ہیں،رمضان کی آمد سے پہلے حضور اکرم ؐ نے لوگوں کو ذہنی طور پر تیار کیا ہے،انسان کی عبادت سے اللہ تعالیٰ بہت خوش ہوتا ہے،نیکیوں میں ایک دوسرے سے آگے بڑھنے کی کوشش کرنی چاہیئے،رمضان میں نفلی عبادت کا ثواب فرض کے برابر یہ صبر کاٗ ہمدردی اور خیر خواہی کا مہینہ ہے،رمضان 30 روزہ ورکشاپ ہے، جو روح و جسم کو تازہ رکھتی ہے،اللہ تعالیٰ روزے کی جزا بن جاتا ہے،جنت میں روزہ داروں کے لیے ایک مخصوص دروازہ ہوگا جو صرف روزہ داروں کے داخل ہونے کے بعد بند کر دیا جائے گا،روزہ کا بنیادی مقصد سمجھنا چاہئے، نیکی کی شناخت اور برائی کی شناخت اس ماہ رمضان میں انسان بخوبی کرسکتا ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ تنظیم نو کے بعد دس اضلاع بنائے گئے،87علاقے تشکیل دیے گئے ہیں اور زون کے نظام کو ختم کر دیا گیا ہے،جماعت کے کارکنان عوام کے درمیان موجود ہیں،ہمیں  مزیدکارکن سازی پر توجہ دیناہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -