”نیب اپنی سیاسی جماعت بنائے اور عمران خان کیساتھ۔۔۔“ حمزہ شہباز شریف پھٹ پڑے

”نیب اپنی سیاسی جماعت بنائے اور عمران خان کیساتھ۔۔۔“ حمزہ شہباز شریف پھٹ ...
”نیب اپنی سیاسی جماعت بنائے اور عمران خان کیساتھ۔۔۔“ حمزہ شہباز شریف پھٹ پڑے

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماءحمزہ شہباز شریف نے کہا ہے کہ عمران خان نے کنٹینر پر چڑھ کر قوم کو سبز باغ دکھائے لیکن انہیں قوم کے سینے پر لگائے گئے مہنگائی کے زخموں کا حساب دینا ہو گا۔ چیئرمین نیب نے اگر پریس کانفرنس کرتی ہے وہ سیاسی جماعت بنا لے اور عمران نیازی کیساتھ الحاق کر لے۔

لاہور ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حمزہ شہباز شریف نے کہا کہ میں وثوق سے کہنا چاہتا ہوں کہ جب تاریخ اور پاکستان کی ڈوبتی ہوئی معیشت کی کہانی لکھی جائے گی تو اس میں نیب اور اس کا عمران خان نیازی کیساتھ گٹھ جوڑ سرفہرست ہو گا۔ میں اپنے مقدمے یا نیب کی گرفتاری کی وجہ سے فکرمند نہیں بلکہ مجھے عام ریڑھی والے کی فکر ہے جس کی بچی بھوک سے تڑپ رہی ہے، مجھے غریب آدمی کی بے بسی پر رونا آتا ہے جس کی ماں ایڑیاں رگڑ رگڑ کر مر رہی ہے مگر وہ دوائی نہیں خرید سکتا کیونکہ وہ 400 فیصد مہنگی ہو گئی ہے۔

حمزہ شہباز شریف نے وزیراعظم عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اس قوم پر رحم کرو اور جھوٹ بولنا بس کر دو۔ تم نے کنٹینر پر چڑھ کر اس قوم کو سبز باغ دکھائے تھے، تمہارا وقت آنے والا ہے اور تمہیں نیب کے پیچھے نہیں چھپنے دیں گے، اس قوم کے سینے پر مہنگائی کے جو زخم لگائے ہیں، تمہیں اس کا حساب دینا ہو گا، ہم گھبرانے والے نہیں، شہباز شریف بھی واپس آئیں گے، نواز شریف اپنی بیماری بیوی کو بستر مرگ پر چھوڑ کر واپس آیا، ہم تو مشرف دور میں بھی نہیں بھاگے تھے، تم جھوٹے، فریبی، دھوکے باز، نالائق اور نااہل ہو۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی روپیہ انتہائی نچلی سطح تک گر گیا ہے اور روپیہ گرنے سے معیشت گرتی ہے، بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافے سے لوگ پریشان ہیں اور وزیراعظم کہتے ہیں کہ سب کچھ ٹھیک ہو جائے گا، مجھے تو دور دور تک کوئی امید کی کرن نظر نہیں آتی، ملک معاشی طور پر کمزور ہوتے ہیں تو قومیں ڈوب جاتی ہیں ، حکمرانوں کی کشتی ہچکولاے کھا رہی ہے۔

حمزہ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ چیئرمین نیب نے اگر پریس کانفرنس کرنی ہے تو وہ اپنی سیاسی جماعت بنا لے اور اس کا نام نیب رکھ کر عمران نیازی کیساتھ الحاق کر لے۔

مزید : قومی