ڈنمارک کی حکومت نے وزیراعظم کے بیٹے کی محبوبہ کو ہی ملک سے نکال دیا، وجہ جان کر پاکستانیوں کو یقین نہ آئے

ڈنمارک کی حکومت نے وزیراعظم کے بیٹے کی محبوبہ کو ہی ملک سے نکال دیا، وجہ جان ...
ڈنمارک کی حکومت نے وزیراعظم کے بیٹے کی محبوبہ کو ہی ملک سے نکال دیا، وجہ جان کر پاکستانیوں کو یقین نہ آئے

  

کوپن ہیگن(مانیٹرنگ ڈیسک) ڈنمارک کی حکومت نے اپنے وزیراعظم کے بیٹے کی محبوبہ کو ہی ملک سے نکالنے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کی وجہ ایسی ہے کہ سن کر پاکستانیوں کو یقین ہی نہ آئے۔ میل آن لائن کے مطابق اس 22سالہ لڑکی کا نام ایرن کیترینا کرسچن مین ہے جو امریکی شہری اور سوشل میڈیا سٹار ہے۔ وہ کئی سال سے ڈنمارک کے وزیراعظم لارس لوک ریسموسین کے بیٹے ’برگر‘ کے ساتھ تعلق میں ہے اور کچھ عرصہ قبل اس کے ساتھ ڈنمارک منتقل ہوئی ہے۔ تاہم ڈنمارک کے کچھ ایسے قوانین ہیں جن کی وجہ سے وہ ملک میں نہیں رہ سکتی، چنانچہ حکومت نے اسے نکالنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق کیترینا کو رواں ماہ کے اختتام تک ملک سے نکل جانے کا حکم دے دیا گیا ہے۔ ڈنمارک کا جو قانون اس کے ملک میں رہنے میں مانع ہے وہ امیگریشن لاءہے جو 2002ءمیں بنایا گیا۔ اس کے تحت ڈنمارک کے کسی شہری کی غیرملکی بیوی یا شوہر اور گرل فرینڈ یا بوائے فرینڈ کو ملک میں داخل ہونے کا خودکار حق نہیں ہے۔ اس کے لیے اسے دیگر غیرملکی شہریوں کی طرح باقاعدہ ویزہ لینا پڑتا ہے۔ چنانچہ کیترینا بھی برگر کی گرل فرینڈ کی حیثیت سے ملک میں نہیں رہ سکتی۔ اس معاملے میں اپنی بے بسی پر وزیراعظم لارس نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”میں حیران ہوں ہم ایک ایسے ملک میں رہتے ہیں جہاں وہ (کیترینا)کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔“

مزید :

بین الاقوامی -