روسی وزیر خارجہ سے شاہ محمود قریشی کی ملاقات،تجارت، توانائی اوردفاع سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے  پر اتفاق

روسی وزیر خارجہ سے شاہ محمود قریشی کی ملاقات،تجارت، توانائی اوردفاع سمیت ...
 روسی وزیر خارجہ سے شاہ محمود قریشی کی ملاقات،تجارت، توانائی اوردفاع سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے  پر اتفاق

  


بشکیک(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے شنگھائی تعاون تنظیم کی وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس کے موقع چین ،روس،  قازخستان کے وزرائے خارجہ سے الگ الگ ملاقاتیں کی ہیں، روسی ہم منصب سے ملاقات میں پاکستان اور روس نے تجارت، توانائی اور دفاع سمیت مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے سے اتفاق کیا ہے۔

یہ اتفاق رائے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور ان کے روسی ہم منصب سرگئی لاوروف کے درمیان  بشکیک میں شنگھائی تعاون تنظیم کی وزرا خارجہ کی کونسل کے اجلاس کے موقع پر ایک ملاقات کے دوران طے پایا۔ دونوں رہنماوں نے بالخصوص افغانستان میں امن عمل ہونے والی پیشرفت سمیت خطے میں سکیورٹی کی صورتحال اور دوطرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کیا۔ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ملاقات کے دوران دوطرفہ تجارتی حجم کو بڑھانے کے مختلف پہلوئوں پر تبادلہ خیال کیا گیا،علاوہ ازیں پاکستان اور قازخستان نے دوطرفہ تجارت کا حجم ایک ارب ڈالر تک بڑھانے پراتفاق کیا ہے۔یہ اتفاق رائے کرغزستان کے دارالحکومت بشکیک میں شنگھائی تعاون تنظیم کی وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس کے موقع پر وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اور ان کے قازخستان کے ہم منصبBeibut Atamkalov کے درمیان ملاقات میں طے پایا۔

دونوں ملکوں کے وزرائے خارجہ نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو مزید وسعت دینے پر بھی اتفاق کیا۔ دریں اثنائوزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ چین کے ساتھ دوستی پاکستان کی خارجہ پالیسی کااہم جزو ہے۔وہ کرغزستان کے دارالحکومت بشکیک میں شنگھائی تعاون تنظیم کے وزرا خارجہ کی کونسل کے اجلاس کے موقع پر اپنے چینی ہم منصب wang yi سے باتیں کررہے تھے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ چین ہمارا قریبی دوست اور مضبوط شرکت دار ہے۔ شاہ محمود قریشی نے چین کی جانب سے اہم امور پر پاکستان کی حمایت اور خطے میں امن و استحکام کیلئے اس کے کردار کو سراہا ہے۔وزیر خارجہ نے ایک خطہ ایک سڑک کے دوسرے فورم کے کامیاب انعقاد پر چینی ہم منصب کو مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ اس فورم کی کامیابی عالمی برادری کی چینی پالیسیوں پر اعتماد کا مظہرہے۔

مزید : قومی