لاک ڈاؤن سے بدحال تھیٹر کے فنکاروں کا عید پر شوز کی اجازت نہ ملنے پر احتجاج

  لاک ڈاؤن سے بدحال تھیٹر کے فنکاروں کا عید پر شوز کی اجازت نہ ملنے پر احتجاج

  

لاہور(فلم رپورٹر)عید الفطر پر تھیٹرز بحال نہ ہونے پر فنکاروں میں مایوسی کی لہر دوڑ گئی ہے اس سلسلے میں اپنے مطالبات کے لئے گزشتہ روز فنکاروں نے اسمبلی ہال کے باہر ایک گھنٹہ دھرنا دینے کے ساتھ ساتھ وزیر اعلیٰ ہاؤس کے باہر بھی احتجاج کیا۔احتجاج کرنے والوں میں پروڈیوسر قیصر ثناء اللہ خان،ڈائریکٹرڈاکٹر اجمل ملک، کامیڈین سرفراز وکی،برجو،شہزاد گجر،پرویز خان سمیت ڈانسرز اور تھیٹر کے دیگر شعبوں سے وابستہ افراد کی بڑی تعداد شامل تھی۔ یاد رہے کہ ایک روز قبل تھیٹر سے وابستہ شخصیات کے نمائندہ وفد نے گورنر پنجاب چوہدری محمد سروراور ایڈیشنل چیف سیکرٹری مومن آغا سے ملاقات کی تھی لیکن دونوں نے عید پر تھیٹر کھولنے کے مطالبہ کو مسترد کردیا تھا۔ نسیم وکی کا کہنا ہے کہ حکومت کو چاہیے تھا کہ تھیٹرزکی بندش ختم کرکے اداکاروں کو اس عید پر روزگار کی بحالی کا تحفہ دیتی مگر افسوس ایسا کچھ نہیں کیا گیا۔تھیٹر کی بندش کے بارے فنکاروں کا کہنا ہے کہ یہ عید انتہائی اداس گذرے گی جبکہ چھوٹے فنکاروں اور ڈانسر بوائز کے گھروں پر تو فاقوں کا راج ہوگا۔ناصر چنیوٹی نے کہاکہ تھیٹرز اوپن نہ کرکے فنکاروں کی عید کی خوشیاں ماند کردی گئی ہیں۔ سخاوت ناز کا کہنا تھا کہ تھیٹرز کھلنے سے ایک بہت بڑا ریونیو اکٹھا ہونا تھا جو ملکی ترقی اور معیشت میں اہم کردار اداکرتا مگر لگتا ہے حکومت اس معاملے میں سنجیدہ نہیں ہے۔لیلیٰ صدیقی کا کہنا تھا کہ فنکاروں کو ہمیشہ طفل تسلیاں دی جاتی رہی ہیں کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا اگر یہی روش رہی تو ملک کا نام بلند کرنے والے اداکار مزدوری کرتے نظر آئیں گے۔مہک نور کا کہنا تھافنکاروں کے پاس کوئی جمع پونجی بھی نہیں ہے کہ وہ بیٹھ کر کھائیں ان کا یہی ذریعہ روزگار ہے جو دوماہ سے بند کردیا گیاہے ان کی حکومتی سطح پر بھی مدد نہیں کی جارہی۔کامیڈین غفار لہری کا کہنا ہے کہ اداکاروں کی کثیرتعداد غریب ہے اور کرائے کے گھروں میں رہتی ہے ان کا اس لاک ڈاؤن میں بہت برا حال ہے اوپر سے تھیٹرز اور شوزکی بندش نے انہیں اور زیادہ مفلسی کا شکار بنا دیاہے اس لیئے وہ فاقوں کے ھاتھوں مرنے پر مجبور ہوچکے ہیں اس لئے شوبز سرگرمیاں جاری رہنی چاہیئے تاکہ ان کا روزگار چل سکے۔تابندہ علی نے کہاکہ جو سلوک اس حکومت میں فنکاروں کے ساتھ کیا جارہاہے کبھی کسی دور حکومت میں نہیں کیا گیا عید پر تھیٹرز نہ کھولنے کے فیصلہ سے لگتاہے کہ عید کے بعد بھی تھیٹرز نہیں کھولے جائینگے۔ندا چوہدری کا کہنا تھا کہ جس طرح دوسرے کاروبار ایس او پیز کے ساتھ کھولے گئے ہیں اسی طرح تھیٹرز کو بھی کھولا جاتا تو وباء سے ڈری عوام اور فاقوں کے ہاتھوں شکار بننے والے فنکاروں کے چہروں پر خوشی کی لہر دوڑ جاتی مگر لگتا ہے اس حکومت نے فنکاروں کو بھوکا مارنے کی تیاری کرلی ہے۔اداکارہ نادیہ علی کا کہنا ہے کہ تھیٹرز کھلنے سے رونقیں لوٹ آتیں مگر لگتا ہے کہ فنکاروں کی قسمت میں یہ خوشیاں یہ رونقیں نہیں ہیں۔

فنکار دھرنا

مزید :

صفحہ آخر -