پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر 18.61ارب ڈالر،جاری خساروں میں 71فیصد کمی

  پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر 18.61ارب ڈالر،جاری خساروں میں 71فیصد کمی

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں مزید 12.62 کروڑ ڈالر کی کمی ہوئی ہے۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری بیان کے مطابق پاکستان کے مجموعی زرمبادلہ کے ذخائر 15 مئی کو ختم ہونے والے کاروباری ہفتے میں 18.61 ارب ڈالر رہ گئے۔ اسٹیٹ بینک کے ذخائر 14 کروڑ ڈالر کم ہوکر 12.12 ارب ڈالر ہوگئے جبکہ شیڈول بینکوں کے ذخائر 1.5 کروڑ ڈالر اضافے سے 6.48 ارب ڈالر رہے۔اسٹیٹ بینک کے مطابق ہفتے کے دوران قرضوں کی مد میں 15.61کروڑ ڈالر کی ادائیگی کے سبب زرمبادلہ ذخائر میں کمی ہوئی۔دوسری جانب رواں مالی سال کے پہلے 10 ماہ میں جاری کھاتوں کے خسارے میں 71 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے جاری بیان کے مطابق اپریل میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 48.24 فیصد کم ہوگیا،جولائی تا اپریل کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 8 ارب 10 کروڑ 60 لاکھ ڈالرز کم ہوا۔مرکزی بینک کے اعداد و شمار کے مطابق اپریل میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 53 کروڑ 30 لاکھ ڈالرز کی کمی ہوئی، جولائی تا اپریل کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 3 ارب 34 کروڑ 30 لاکھ ڈالرز رہا۔ گزشتہ سال اسی عرصے میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 11 ارب 44 کروڑ 90 لاکھ ڈالرز تھا۔اسٹیٹ بینک کے مطابق اپریل 2020 میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 57 کروڑ 20 لاکھ ڈالرز رہا، اپریل 2019 میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 1 ارب 10 کروڑ 50 لاکھ ڈالرز تھا۔خیال رہے کہ جب کسی ملک کی درآمدات زیادہ اور برآمدات کم ہوں تو وہ ملک کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کا شکار ہوتا ہے۔

زرمبادلہ 

مزید :

صفحہ اول -