سندھ پبلک سروس کمیشن سندھی نواز ادارہ بن گیا ہے،ڈاکٹر سلیم حیدر

سندھ پبلک سروس کمیشن سندھی نواز ادارہ بن گیا ہے،ڈاکٹر سلیم حیدر

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے سندھ پبلک سروس کمیشن کی جانب سے 151 غیر مہاجروں کو کمیشن کے امتحانات میں پاس کرکے آفر لیٹر دیئے جانے کو کھلی دھاندلی، ظلم، متعصبانہ سوچ اور مہاجر دشمنی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ پبلک سروس کمیشن اب سندھ کا ادارہ نہیں بلکہ یہ سندھی پبلک سروس کمیشن بن گیا ہے جہاں صرف اور صرف سندھیوں کو اعلیٰ پوسٹوں پر پاس کرکے انہیں پوسٹنگ دی جاتی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ دنوں اس ادارے میں 151 امیدواروں کو کامیاب قرار دیا ان میں ایک بھی مہاجر، پنجاب یا کسی اور قومیت سے تعلق نہیں رکھتا یہ سارے کے سارے سندھی النسل ہیں جن کو جھوٹ، فراڈ اور دھاندلی کی بنیاد پر کامیاب قرار دے کر سندھ کو تباہ وبرباد کرنے کیلئے پوسٹنگ دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حیدرآبا دمیں قائم سندھ پبلک سروس کمیشن برسہا برس سے کراچی، حیدرآباد سمیت سندھ کے مہاجروں کے ساتھ کھلی دشمنی پر اُترا ہوا ہے۔ سب سے اعلیٰ تعلیم یافتہ قوم مہاجر نوجوانوں کو اس ادارے سے نہ تو کبھی پاس کیا جاتا ہے اور نہ ہی انہیں ملازمت کے آفر لیٹر دیئے جاتے ہیں۔ سندھ کے دیہی علاقوں سے تعلق رکھنے والے وڈیروں اور حکمراں جماعت کے اراکین و امیدواروں کے بچوں اور رشتے داروں کو پاس کیا جاتا ہے جس کی منظوری وزیراعلیٰ ہاؤس سے دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ظلم کی انتہا یہ ہے کہ برسہا برس تعلیمی میدان میں محنت کرنے والے مہاجر نوجوانوں کو اس ادارے سے کبھی کوئی فائدہ نہیں ہوتا بلکہ یہ ادارہ صرف اور صرف سندھی نواز ادارہ بن گیا ہے۔ اس وقت سندھ کی حکومت سندھ میں سندھیوں کے علاوہ باقی سب کو دیوار سے لگانے پر تلی ہوئی ہے۔ اگریہی صورتحال رہی تو پھر سندھ کے مہاجر اپنا کوئی اور لائحہ عمل طے کریں گے اس لئے کہ اس طرح کا ظلم و زیادتی برداشت نہیں کی جاسکتی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -