حادثے کا شکار ہونیوالے قومی ایئرلائن کے طیارے میں پہلے ہی فنی خرابی کا انکشاف

حادثے کا شکار ہونیوالے قومی ایئرلائن کے طیارے میں پہلے ہی فنی خرابی کا انکشاف
حادثے کا شکار ہونیوالے قومی ایئرلائن کے طیارے میں پہلے ہی فنی خرابی کا انکشاف

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) قومی ایئرلائن پی آئی اے کا مسافر طیارہ کراچی میں لینڈنگ سے کچھ دیر قبل رہائشی علاقے ماڈل کالونی میں گر کر تباہ ہوگیا ہے اور11افراد بشمول خواتین جاں بحق ہونے کی تصدیق ہوچکی ہے، اب نجی ٹی وی چینل نے انکشاف کیا ہے کہ حادثے کا شکار  ہونیوالی ایئربس 320 میں پہلے ہی فنی خرابی تھی ۔ 

ہم نیوز کے مطابق  جناح ہسپتال کی سربراہ ڈاکٹر سیمی جمالی نے ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے تاہم کسی کے شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔ وزیرصحت سندھ کے مطابق11 زخمیوں کو بھی جناح ہسپتال منتقل کیا گیا ہے، ادھر سول ایوی ایشن اتھارٹی کےمطابق پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 میں 99 مسافر اور عملے کے 8 ارکان سوار تھے۔

اے آروائے نیوز  نے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ حادثے کے شکار ایئربس 320 میں پہلے ہی فنی خرابی تھی اورکراچی پہنچنے تک طیارے کا لینڈنگ گیئر نہ کھلنے کی بھی تحقیقات ہورہی ہیں۔مزید بتایا گیاکہ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے متعدد بار پرزے منگوانے کی درخواست بھی کی گئی تھی ۔ 

یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ مذکورہ بدقسمت پرواز تاخیر کا شکار تھی ، پی آئی اے کی ویب سائٹ کے مطابق طیارے کو پہلے دس بجے روانہ ہونا تھا لیکن تاخیر کا شکار ہوا اور سہہ پہر ایک بجے طیارے نے اڑان بھری تاہم اس تاخیر کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ۔ 

مزید :

قومی -