ملتان میں اتائیوں کا جال‘ آپریشن ہر مرض کا علاج‘ انتظامیہ غائب 

ملتان میں اتائیوں کا جال‘ آپریشن ہر مرض کا علاج‘ انتظامیہ غائب 

  

 ملتان (سٹاف رپورٹر)ڈاکٹروں کا شہریوں کی زندگیوں سے کھیلنا معمول بن گیا۔ نجی ہسپتالوں میں عطائی ڈاکٹرز کے غفلت کی انتہا ہوگئی، جعلی ہسپتال اور عطائی ڈاکٹر موت بانٹنے میں مصروف ہیں، نجی ہسپتالوں میں ڈلیوری کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات میں اضافہ ہونے لگا۔  ملتان سمیت جنوبی پنجاب بھر میں ہزاروں کی تعداد میں عطائی ڈاکٹروں نے گلی محلوں میں اپپنے کلینک کھول رکھے ہیں جہاں کھلے عام  مریضوں کا علاج کیا  جاتا ہے  انتظامیہ اور نہ ہی محکمہ صحت کی جانب سے کوئی روک ٹوک ہے لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ کھیلنے کا یہ سلسلہ سالہاسال سے جاری  ہے  صرف ملتا ن میں ہی سیکٹروں کی تعداد میں عطائی ڈاکٹر مریضوں کی زندگیوں سے کھیل رہے ہیں  جو نہ صرف جھوٹی موٹی بیماری کی صورت میں ادویات دے رہے ہیں بلکہ آج کل گرمی کی شدت کی وجہ سے نڈھال مریضو ں کو کھلے عام ڈریپیں بھی لگائی جارہی ہیں جنوبی پنجاب بھر کے اضلاع کی صورت حال دیکھی جائے تو خطے کے پسماندہ علاقوں میں عطائیوں نے پنجے گاڑھ رکھے ہیں نجی ہسپتالوں میں عطائی ڈاکٹروں کی غفلت کی وجہ سے ڈلیوری کے دوران ماں اور بچے  دونوں کی زندگیوں کو شدید خطرہ لاحق ہونے لگا ہے، اس سلسلے میں شہریوں نے گہرے دکھ کا اظہار اور ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ شہر بھر میں جعلی عطائی ڈاکٹروں کا شہریوں کی زندگیوں سے کھیلنا معمول بن گیا ہے۔ آئے روز نجی ہسپتالوں میں جعلی عطائی ڈاکٹروں کی غفلت کے باعث قمیتی جانوں کا ضیاع ہو رہا ہے جو کہ انتہائی تشویش کی بات ہے۔

مزید :

صفحہ اول -